Wednesday , June 20 2018
Home / شہر کی خبریں / گرمائی تعطیلات میں سینکڑوں افراد کی نہرو زوالوجیکل پارک کی تفریح

گرمائی تعطیلات میں سینکڑوں افراد کی نہرو زوالوجیکل پارک کی تفریح

رنگ برنگے پرندوں ، جانوروں سے سیاح لطف اندوز ، کیوریٹر بی این این مورتی سے بات چیت

رنگ برنگے پرندوں ، جانوروں سے سیاح لطف اندوز ، کیوریٹر بی این این مورتی سے بات چیت
حیدرآباد ۔9 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : گرمائی تعطیلات کے آغاز کے ساتھ والدین اور بچے سیر و تفریح کے لیے ایسے مقامات کا انتخاب کرتے ہیں جہاں سیر و تفریح کے علاوہ بچوں کے لیے اسکولی نصاب سے میل کھاتی کچھ تفصیلات اور معلومات بھی حاصل ہوجائیں ۔ اور ایسے ہی مقامات میں ایشیاء کے بڑے زو پارکس میں شمار کیا جانے والا شہر حیدرآباد کا زو نہرو زوالوجیکل پارک بھی ہے ۔ ہندوستان میں نہرو زوالوجیکل پارک حیدرآباد کو خصوصی اہمیت حاصل ہے ۔ 6 اکٹوبر 1963 کو قائم کردہ اس چڑیا گھر میں مختلف انواع و اقسام کے چرند و پرند موجود ہیں جنہیں دیکھنے کے لیے صرف ریاست ہی نہیں بلکہ ہندوستان اور دنیا کے دیگر ممالک سے یہاں سیاح پہنچتے ہیں ۔ نہرو زوالوجیکل پارک کے سربراہ بی این این مورتی آئی ایف ایس ، ڈی وائی سی ایف / کیوریٹر سے ملاقات سے تفصیلات حاصل کی ۔ 380 ایکڑ اراضی پر محیط اس زو کو ایشیاء کے بڑے زو پارکس میں شامل ہونے کا اعزاز حاصل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس وسیع و عریض زو میں 168 اقسام کے 1600 جانور ہیں اور اس کثیر تعداد کی وجہ سے یہ زو ہندوستان کے علاوہ ایشیا میں اپنی ایک منفرد شناخت رکھتا ہے ۔ زو پارک حیدرآباد میں جو اہم اور بڑے جانور ہیں ان میں 7 سفید شیر ، 9 پیلے شیر ، 11 ببر اور 5 ہاتھی ہیں ۔ داخلہ فیس فی ٹکٹ بچوں کے لیے 10 اور بڑوں کے لیے 20 روپئے مقرر کئے گئے ہیں ۔ جانوروں کے مشاہدوں اور ان کی تصاویر اور فلم بندی کے لیے اسٹیل کیمرہ کے لیے 20 روپئے ، ویڈیو کیمرہ کے لیے 100 روپئے اور کار اندر لیجانے کی بھی اجازت ہے جس کے لیے ایک ہزار روپئے ادا کرنے ہوں گے ۔ زو پارک کے اندر جانوروں کو فضائی آلودگی سے محفوظ رکھنے والی ماحولیات دوست گیس کی 35 کاروں سے بھی استفادہ کرسکتے ہیں جس میں سواری کے لیے بچوں کی 20 روپئے اور بڑوں کے لیے 40 روپئے فی ٹکٹ مقرر کی گئی ہے ۔ اس کے علاوہ ایک ٹرین بھی موجود ہے جس میں بچوں کے لیے 5 روپئے اور بڑوں کے لیے 15 روپئے ٹکٹ مقرر کیا گیا ہے اور یہ ٹرین پورے زو کا چکر لگاتی ہے ۔ کیوریٹر مورتی جن کا تعلق کرناٹک سے ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس عہدے پر گذشتہ چند مہینوں سے فائز ہیں ۔ حیدرآباد اور یہاں کی عوام کے تعلق سے مورتی نے کہا کہ یہ شہر امن پسند شہر ہے اور زو کا مشاہدہ کرنے والے افراد بھی ڈسپلین کی پابندی کرتے ہوئے خود کو ذمہ دار شہری ثابت کرتے ہیں ۔ تعطیلات میں زو پارک میں عوام کے ہجوم کا تذکرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ روزانہ 10 تا 12 ہزار افراد مشاہدہ کرتے ہیں جب کہ ہفتہ اور اتوار کو عوام کی تعداد 20 ہزار کے لگ بھگ رہتی ہے ۔ سیکوریٹی اور دیگر انتظامات کے لیے زو پارک میں اہم مقامات پر 40 کیمرے نصب کئے گئے ہیں جب کہ 200 افراد پر مشتمل مستقل اور 200 افراد پر آوٹ سورسنگ اسٹاف بھی موجود ہے ۔ نہرو زوالوجیکل پارک حیدرآباد کو ہر پیر ہفتہ واری تعطیل ہوتی ہے ۔ کیوریٹر مورتی نے عوام سے اپیل کی کہ وہ زو پارک کے مشاہدہ کے وقت صرف ضروری سامان ہی ساتھ لائیں ۔ کیوں کہ غیر ضروری سامان کی وجہ سے انہیں ہی دقت ہوگی ۔ جانوروں کے مشاہدہ کے وقت احتیاط برتیں اور ان کے ساتھ چھیڑ چھاڑ ہرگز نہ کریں ۔ زو پارک کو مزید اپ گریڈ کرنے کے منصوبہ کی تفصیلات بتاتے ہوئے مورتی نے کہا کہ ایک اختراعی منصوبہ کے تحت اس زو پارک کو ایسے پارک میں تبدیل کرنے کی تیاریاں زور و شور سے جاری ہیں جس کے بعد عوام کو اس زو کا مشاہدہ کرتے وقت ایسا محسوس ہوگا کہ وہ کسی زو پارک میں نہیں بلکہ ایک جنگل میں داخل ہوچکے ہیں جہاں انہیں اطراف جانور دکھائی دیں گے ۔ زو پارک کو خوبصورت بنانے کے لیے پودے بھی لگائے جارہے ہیں جو کہ 2 ماہ میں مکمل کرلیے جائیں گے ۔ یاد رہے کہ 380 ایکڑ اراضی پر محیط اس زو پارک میں 62 ایکڑ اراضی موقوفہ بھی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT