Thursday , November 23 2017
Home / شہر کی خبریں / گریٹر حیدرآباد میں 31 اقلیتی اقامتی اسکولس کو قائم کرنے کی تجویز

گریٹر حیدرآباد میں 31 اقلیتی اقامتی اسکولس کو قائم کرنے کی تجویز

عوامی نمائندوں کے ساتھ اجلاس ، اسمبلی حلقہ واری سطح پر اسکولس کو قطعیت
حیدرآباد۔13 جنوری (سیاست نیوز) حکومت نے آئندہ تعلیمی سال سے گریٹر حیدرآباد کے حدود میں 31 اقلیتی اقامتی اسکولس کے قیام کی تجویز رکھی ہے۔ اس سلسلہ میں عوامی نمائندوں کے ساتھ اجلاس میں اسکولوں کی تعداد کو قطعیت دی گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ 15 اسمبلی حلقوں میں فی الوقت 9 اقامتی اسکولس کارکرد ہیں جن میں لڑکوں کے پانچ اور لڑکیوں کے چار اسکولس شامل ہیں۔ بہادر پورہ اسمبلی حلقہ میں دو اسکولس قائم کئے گئے جبکہ نامپلی، چارمینار، ملک پیٹ، کاروان، مشیر آباد، سکندرآباد کنٹونمنٹ اور چندرائن گٹہ میں ایک ایک اسکول قائم کیا گیا۔ آئندہ تعلیمی سال سے مزید 31 اسکولوں کے قیام کی تجویز ہے جس سے حیدرآباد میں اقامتی اسکولس کی تعداد بڑھ کر 40 ہوجائے گی۔ لڑکیوں کے 20 اور لڑکوں کے 20 اقامتی اسکولس آئندہ تعلیمی سال سے کارکرد ہوجائیں گے۔ نئے منصوبے کے تحت بہادرپورہ اسمبلی حلقہ میں دو، نامپلی اور چارمینار اسمبلی حلقوں میں تین تین اسکولس کے قیام کا منصوبہ ہے۔ ملک پیٹ، کاروان، خیریت آباد، جوبلی ہلز، چندرائن گٹہ اور سکندرآباد میں دو دو اسکولس قائم کئے جائیں گے۔ یاقوت پورہ میں چار اور گوشہ محل میں تین اسکولوں کے قیام کا منصوبہ ہے۔ مشیر آباد، عنبر پیٹ اور صنعت نگر میں ایک ایک اسکول قائم کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT