گلبرگ سوسائٹی مقدمہ 3 ماہ میں کارروائی مکمل کرنے کی ہدایت : سپریم کورٹ

نئی دہلی ۔ 13 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج احمدآباد کی ٹرائل کورٹ کو گلبرگ سوسائٹی قتل عام مقدمہ کی کارروائی اندرون 3 ماہ مکمل کرنے کی ہدایت دی۔ گجرات فسادات کے دوران گلبرگ سوسائٹی میں سابق کانگریس رکن پارلیمنٹ احسان جعفری اور 67 دیگر ہلاک ہوگئے تھے۔ چیف جسٹس ایچ ایل دتو کی ذریعہ قیادت خصوصی بنچ نے قانونی کارروائی میں تاخیر

نئی دہلی ۔ 13 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج احمدآباد کی ٹرائل کورٹ کو گلبرگ سوسائٹی قتل عام مقدمہ کی کارروائی اندرون 3 ماہ مکمل کرنے کی ہدایت دی۔ گجرات فسادات کے دوران گلبرگ سوسائٹی میں سابق کانگریس رکن پارلیمنٹ احسان جعفری اور 67 دیگر ہلاک ہوگئے تھے۔ چیف جسٹس ایچ ایل دتو کی ذریعہ قیادت خصوصی بنچ نے قانونی کارروائی میں تاخیر کی بناء ملزمین کو طویل عرصہ تک جیل میں رکھے جانے پر تشویش کا اظہار کیا اور اسپیشل انوسٹی گیشن ٹیم (ایس آئی ٹی) کو مقدمہ کی کارروائی عاجلانہ طور پر مکمل کرنے کی ہدایت دی۔ تاہم بنچ نے یہ بھی کہا کہ ٹرائل کورٹ کو سپریم کورٹ کی اجازت کے بغیر فیصلہ نہیں سنانا چاہئے۔ سابق سی بی آئی ڈائرکٹر آر کے راگھون نے ایس آئی ٹی کی قیادت کررہے ہیں، کہا کہ اندرون 3 ماہ قانونی کارروائی مکمل کرنا دشوار ہے۔ اس وقت بنچ نے کہا کہ قانونی چارہ جوئی کا عمل تیزی سے آگے بڑھایا جائے اور انہیں اجازت دی کہ اگر اندرون 3 ماہ یہ کام مکمل نہ ہو تو وہ عدالت سے رجوع ہوسکتے ہیں۔ بنچ نے قبل ازیں سماعت کے دوران کہا تھا کہ وہ اس معاملہ میں کچھ احکامات جاری کرنا چاہتے ہیں کیونکہ انہیں بعض ملزمین سے یہ مکتوب ملا ہیکہ وہ تقریباً 10 سال سے جیل میں ہے۔

3 اپریل کو سماعت کے دوران عدالت نے گجرات میں مابعد گودھرا فسادات 9 مقدمات میں جاری پیشرفت پر اطمینان کا اظہار کیا تھا۔ ان مقدمات کی تحقیقات اسپیشل انوسٹی گیشن ٹیم کررہی ہے جس میں اس وقت کے چیف منسٹر نریندر مودی کو کلین چٹ دی ہے۔ عدالت نے کہا تھا کہ مقدمات میں کافی پیشرفت ہوئی اور 9 کے منجملہ 6 مقدمات ختم ہوچکے ہیں جبکہ 3 قطعی مرحلہ میں پہنچ چکے ہیں۔ سپریم کورٹ نے قومی انسانی حقوق کمیشن اور مختلف این جی اوز کی جانب سے تحقیقات کے بارے میں شبہات ظاہر کرنے کے بعد 9 حساس مقدمات کی راست نگرانی شروع کی تھی۔ ایک اندازہ کے مطابق 2002ء میں مابعد گودھرا فسادات میں تقریباً 2000 افراد ہلاک ہوئے۔ ایس آئی ٹی نے مارچ 2012ء میں احمدآباد کے گلبرگ سوسائٹی فسادات مقدمہ کی قطعی رپورٹ سپریم کورٹ پیش کی تھی جس میں نریندر مودی اور دیگر کو کلین چٹ دی گئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT