Monday , September 24 2018
Home / شہر کی خبریں / گلوبل انٹرپرینئر سمٹ سے متعلق ہندوستانی اور امریکی صنعتکاروں میں زبردست جوش

گلوبل انٹرپرینئر سمٹ سے متعلق ہندوستانی اور امریکی صنعتکاروں میں زبردست جوش

ایوانکا ٹرمپ کی شرکت سے سمٹ کی اہمیت میں اضافہ‘ شرکت کیلئے 44,000 درخواستیں

حیدرآباد۔ 16؍ نومبر ( سیاست نیوز) تاریخی شہر حیدرآباد فرخندہ بنیاد کو ساری دنیا میں حضور نظام نواب میر عثمان علی خان کی بے تحاشہ دولت ان کی لاقیمت ہیرے و جواہرات سے مزین زیورات کے کلکشن ‘ حیدرآبادی تہذیب و روایات ‘ حیدرآباد کے پانی اور یہاں کی لذیذ ڈشس کے باعث ایک منفرد پہچان حاصل ہے۔ ہمارے اس شہر کو منی انڈیا ( چھوٹا ہندوستان) بھی کہا جاتا ہے۔ کیونکہ اس شہر نے اپنے دامن میں ہندوستان کے ہر مقام سے تعلق رکھنے والوں کو پناہ دی ہے۔ حیدرآباد کو دنیا میں موتیوں کے شہرکی حیثیت سے بھی جاناتا ہے۔ شاہی اور جمہوری ہر دور میں شہر حیدرآباد بیرونی مہمانوں کے لئے خصوصی توجہ کا مرکز رہاہے ۔ ماضی میں امریکہ کے دو سابق صدور جارج بش اور بل کلنٹن نے دورہ ہند کے موقع پر دورہ حیدرآباد کو بطور خاص ترجیح دی ۔ اب موجودہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی دختر ایوانکا ٹرمپ نومبر کے آخری ہفتہ میں حیدرآباد آ رہی ہیں ۔ حکومت تلنگانہ تاریخی قلعہ گولکنڈہ میں ان کے اعزاز میں عشائیہ کا اہتمام کر رہی ہے ۔ ایوانکا ٹرمپ تین روزہ گلوبل انٹرپرینئرشپ سمٹ میں بطور خاص شرکت کے لئے حیدرآباد آ رہی ہیں ان کے دورے کو لیکر ٹکنالوجی کے ماہرین میں زبردست جوش و خروش پایاجاتاہے۔ اور حقیقت یہ ہے کہ یہ ماہرین ایوانکا ٹرمپ کی ایک جھلک دیکھنے بیتاب ہیں۔ گلوبل انٹرپرینئرشپ سمٹ میںجو 26 نومبر سے حیدرآباد میں منعقد ہو رہی ہے جملہ 1200 انٹرپرینئرشپ کرنے والے ہیں ان میں 400 کا تعلق ہندوستان اور 800 کا امریکہ اور دوسرے ملکوں سے ہے۔ لیکن پتہ چلا ہے کہ 400 سلاٹس کے لئے کاروبار مختلف انسارٹ اپس سے جڑی شخصیتوں نے درخواستیں دی ہیں۔ گلوبل انٹرپرینئر شپ ماضی میں واشنگٹن‘ استنبول ‘ دوبئی ‘ مراقش ‘ نیروبی ‘ کوالالمپور اور امریکہ کی سلیکان والی میں منعقد ہوچکی ہے۔ ڈونالڈ ٹرمپ انتظامیہ کے تحت یہ پہلی جی ای ایس ہے ۔ سوشیل میڈیا نیٹ ورک ٹوئیٹر پر ڈونالڈ ٹرمپ نے اعلان کیا ہے کہ ان کی بیٹی اور مشیر ایوانکا ٹرمپ گلوبل انٹرپرینئر سمٹ حیدرآباد میںامریکی وفد کی قیادت کریں گی ۔اس مرتبہ جی ای ایس کا عنوان ’’خواتین پہلے ‘ سب کے لئے ترقی‘‘ رکھا گیا ہے ۔ اور خاتون صنعت کاروں پر خصوصی توجہ دی جائیگی ۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہوگا کہ ہندوستان امریکہ کیلئے ایک بہت بڑی مارکٹ ہے اور گذشتہ سال ہندوستان اور امریکہ کی باہمی تجارت کا حجم 115 ارب ڈالرس رہا ۔ 2022 تک اس باہمی تجارت کے حجم کو 500 ارب ڈالرس تک پہنچانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے ۔ وزیراعظم نریندر مودی نے فلپائن میں صدر ڈونالڈ ٹرمپ سے ملاقات کے دوران انہیں بتایا کہ وہ حیدرآباد میں ایوانکا ٹرمپ کے زیر قیادت آنے والے امریکی وفد کا خیرمقدم کرنے کے منتظر ہیں۔

TOPPOPULARRECENT