Monday , June 25 2018
Home / کھیل کی خبریں / گلکرسٹ کا ریکارڈ مساوی کرنا قابل فخر :سرفراز احمد

گلکرسٹ کا ریکارڈ مساوی کرنا قابل فخر :سرفراز احمد

آکلینڈ 8 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان کے وکٹ کیپر بلے باز سرفراز احمد نے آج کہا کہ وہ بہت خوش ہیں کیونکہ انہوں نے آسٹریلیاء کے مایہ ناز وکٹ کیپر آدم گلکرسٹ کا ریکارڈ مساوی کیا ہے ۔ انہوں نے کل ورلڈ کپ میں اپنا پہلا میچ کھیلتے ہوئے اسٹمپس کے پیچھے چھ کیچس لئے تھے ۔ 27 سالہ سرفراز احمد ورلڈ کپ میں پاکستان کے ابتدائی چار میچس میں شامل نہی

آکلینڈ 8 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان کے وکٹ کیپر بلے باز سرفراز احمد نے آج کہا کہ وہ بہت خوش ہیں کیونکہ انہوں نے آسٹریلیاء کے مایہ ناز وکٹ کیپر آدم گلکرسٹ کا ریکارڈ مساوی کیا ہے ۔ انہوں نے کل ورلڈ کپ میں اپنا پہلا میچ کھیلتے ہوئے اسٹمپس کے پیچھے چھ کیچس لئے تھے ۔ 27 سالہ سرفراز احمد ورلڈ کپ میں پاکستان کے ابتدائی چار میچس میں شامل نہیں تھے ۔ انہوں نے ٹورنمنٹ کے اپنے پہلے ہی میچ میں 49 گیندوں میں 49 رنوں کی بہترین اننگز کھیلی تھی ۔ اس کے علاوہ انہوں نے اسٹمپس کے پیچھے جنوبی افریقہ کے چھ بلے بازوں کے کیچس حاصل کئے تھے ۔ کل کی کامیابی کے بعد پاکستان کا ورلڈ کپ کوارٹر فائنلس میں پہونچنے کا امکان برقرار ہے ۔ احمد نے کہا کہ یہ ایک اعزاز کی بات ہے ۔ وہ اس ریکارڈ کے تعلق سے نہیں جانتے تھے تاہم میچ کے بعد کسی نے ان سے کہا کہ انہوں نے گلکرسٹ کا ریکارڈ مساوی کرلیا ہے جس پر انہیں فخر ہوا ہے ۔

اب تک سات وکٹ کیپرس نے ایک اننگز میں چھ کیچس کا ریکارڈ بنایا ہے اور آدم گلکرسٹ پہلے وکٹ کیپر تھے جنہوں نے یہ کامیابی حاصل کی تھی ۔ انہوں نے چار مرتبہ اس کارنامہ کو دہرایا ہے جبکہ الیک اسٹیورٹ ( انگلینڈ ) مارچک بوچر ( جنوبی افریقہ ) میٹ پرائیر ( انگلینڈ ) ‘ جوس بٹلر ( انگلینڈ ( میتھیو کراس ( اسکاٹ لینڈ ) اور اب سرفراز احمد نے گلکرسٹ کا ریکارڈ مساوی کیا ہے ۔ سرفراز احمد نے کہا کہ جنوبی افریقہ کے ماسٹر بلاسٹر اے بی ڈی ولئیرس کو آوٹ کرنے والا کیچ ان کے تمام کیچس میں انتہائی اہمیت کا حامل تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ڈی ولئیرس انتہائی تباہ کن بلے باز ہیں اور انہوں نے پاکستان کی شکست کو یقینی بنادیا تھا ۔ انہوں نے کل 58 گیندوں میں 77 رن پانچ چھکوں کی مدد سے بنائے تھے ۔ سرفراز احمد نے کہا کہ ان کی بیٹنگ کی کامیابی اس وجہ سے رہی کہ انہوں نے ایک منصوبے کے تحت بیٹنگ کی تھی ۔ کوچ وقار یونس اور کپتان مصباح الحق نے ان سے کہا تھا کہ وہ اپنے انداز یں بیٹنگ کریں اور پہلی گیند کے بعد انہوں نے سوچا تھا کہ کریز کے باہر بیٹنگ کرنی چاہئے تاکہ سوئنگ نہ ہوسکے اور یہ منصوبہ ان کیلئے کارآمد ثابت ہوا ۔

TOPPOPULARRECENT