Wednesday , July 18 2018
Home / کھیل کی خبریں / گنگولی 100گیندوں کی کرکٹ کے مخالف

گنگولی 100گیندوں کی کرکٹ کے مخالف

کولکتہ۔14مئی (سیاست ڈاٹ کام)ہندوستانی ٹیم کے سابق کپتان سوروگنگولی نے کہا ہے کہ سو گیندوں کی کرکٹ کو متعارف کرنے سے پہلے احتیاط سے کام لینا چاہئے ،کرکٹ کا جتنا مختصر فارمیٹ کیا جائے گا اتنا ہی اچھی اور کمزور ٹیموں کے درمیان فرق کم ہو جائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ سو بال کرکٹ کا مطلب تو یہی ہے کہ ٹی ٹوئنٹی سے بھی مختصر فارمیٹ آجائے۔ سو گیندوں میں 16.4 اوورس ہوں گے لیکن یہ فارمیٹ شاید اوورز کے بجائے گیندوں کے حساب سے کھیلا جائے۔ دیکھتے ہیں کہ یہ مختصر فارمیٹ کیسا رہتا ہے لیکن انہیں اس طرز کے مقابلوں کے مستقبل پر تشویش ہے۔ واضح رہے کہ گنگولی سے قبل سابق انگلش کرکٹرز بھی انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ کے اس منصوبے پرتشویش کا اظہا رکر چکے ہیں۔ گنگولی نے مزید کہا کہ سو گیندوں کے نئے فارمیٹ پر محتاط رہنے کی ضرورت ہے کیونکہ ایسا نہ ہو کہ شائقین کی گراؤنڈ میں آمد اور پلک جھپکنے سے قبل میچ ختم ہو جائے۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کو بھی مزہ آتا ہے کہ وہ کچھ وقت گراؤنڈ میں موجود رہیں اور اْس دباؤ کو محسوس کریں جو کھلاڑی کرتے ہیں اور ایسے میں ہی اصل صلاحیت اور فاتح کا پتا چلتا ہے۔ گنگولی کے مطابق وہ ٹسٹ کرکٹ کے حامی ہیں کیونکہ اصل چیلنج تو پانچ روزہ میچوں میں ہے۔ کسی کھلاڑی کی حقیقی صلاحیت، صبر وبرداشت ، استقامت ، حوصلہ ،عزائم اور تکنیک کا امتحان ٹسٹ کرکٹ میں ہوتا ہے جبکہ ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ تو صرف کمرشل ضرورت اور لطف اندوز ہونے کا ایک ذریعہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ٹسٹ میچ سے ٹیموں اور کھلاڑیوں کے معیار معلوم ہوتا ہے جب کھلاڑیوں کو پورے دن میدان پر سخت گرمی ،سردی یا مختلف ماحول میں بولنگ ،بیٹنگ اور فیلڈنگ کرنی پڑتی ہے لہٰذا طویل فارمیٹ ہی کرکٹ کا اصل حسن ہے۔

TOPPOPULARRECENT