Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / گوداوری کی سطح آب میں خطرناک اضافہ‘ کئی مواضعات زیرآب

گوداوری کی سطح آب میں خطرناک اضافہ‘ کئی مواضعات زیرآب

تلنگانہ اور آندھراپردیش کے کئی مقامات پر سیلاب جیسی صورتحال ‘ سڑکیں ناکارہ ‘ فصلوں کو نقصان

تلنگانہ اور آندھراپردیش کے کئی مقامات پر سیلاب جیسی صورتحال ‘ سڑکیں ناکارہ ‘ فصلوں کو نقصان

حیدرآباد۔8ستمبر ( سیاست نیوز/پی ٹی آئی) تلنگانہ اور آندھراپردیش میں جاری موسلادھار بارش کے نتیجہ میں کئی مقامات پر سڑک رابطے منقطع ہوگئے ہیں ‘ کئی مواضعات زیرآب آگئے ہیں اور سینکڑوں ایکڑ اراضیات پر محیط فصلوں کو شدید نقصان پہنچا ہے ۔ اس دوران دریائے گوداوری آب گیر رقبوں میں موسلادھار بارش کے سبب دریائے گوداوری کی سطح آب میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے جس کے پیش نظر حکام نے مندروں کے شہر بھدراچلم اور دولیشورم میں خطرے کے سگنلس دے چکے ہیں۔ اس دریا سے 13.54لاکھ کیوزکس پانی سمندر میں چھوڑ دیا گیا ہے ۔ سیلاب کے خطرات کا سامنا کرنے والے اصلاع کے کلکٹریٹس میں خصوصی کنٹرول رومس قائم گئے ہیں اور نشیبی علاقوں میں رہنے والے عوام کو سیلاب کے خطرات سے خبردار کیا جاچکا ہے ۔ دریائے گوداوری کی سطح آب میں اضافہ کے اثر سے آندھراپردیش کے ضلع مشرقی گوداوری میں دولیشورم بیارج کی سطح آب میں 11فٹ اضافہ ہوا ہے ۔ ضلع حکام صورتحال کی نگرانی کررہے ہیں ۔ مشرقی گوداوری کی ضلع کلکٹر نیتو پرساد نے اس کو لاحق سیلاب کے خطرہ کے پیش نظر محکمہ جات ریونیو ‘ آبپاشی اور پولیس کو چوکس کردی ہیں اور دولیشورم بیاریج کی سطح آب میں خطرناک اضافہ سے پیدا ہونے والے مسائل سے نمٹنے کیلئے ایک جائزہ اجلاس طلب کیا ۔ انہوں نے کہا کہ دولیشورم کی سطح آب 12.5 فٹ ہوجانے کے بعد خطرہ کا نشان لگادیا جائے گا ۔ تلنگانہ کے ضلع کھمم میں بھدراچلم سے موصولہ اطلاعات کے مطابق سطح آب 56.3تک پہنچ جانے کے بعد خطرہ کی تیسری وارننگ جاری کردی گئی۔ اس علاقہ میں کئی مواضعات زیر آب آگئے ہیں ۔ کھمم کے علاقوں کناورم ‘ وجیڈو‘ وینکٹاپورم اور چیرالہ میں روڈ ٹریفک بری طرح متاثر ہوئی ہے ۔ این ایس ایس کے مطابق دریائے گوداوری کی سطح آب میں خطرناک اضافہ سے ضلع ورنگل کے ایٹورنگرم میں بھی سیلابی پانی کی سطح میں زبردست اضافہ ہوا ہے ۔تلنگانہ کے مختلف اضلاع بالخصوص کھمم ‘ ورنگل اور عادل آباد کے تقریباً 90دیہاتوں کا دیگر علاقوں سے رابطہ منقطع ہوگیا ہے ۔ سیلابی پانی کے تیز رفتار بہاؤ سے کئی سڑکیں ناکارہ ہوگئی ہیں ۔ پلوں اور ضمنی راستوں کو بھی نقصانات پہنچے ہیں ۔ قومی شاہراہوں پر بھی سیلابی پانی بہہ رہا ہے جبکہ مرچ اور کپاس کے کھیتوں میں پانی جمع ہوگیا ہے ۔ وینگل راؤ پیٹ سے 15خاندانوں کا انخلاء عمل میں لایا گیا ہے ۔ اس دوران محکمہ موسمیات نے تلنگانہ اور آندھراپردیش میں آئندہ 48گھنٹوں کے دوران مزید بارش کی پیش قیاسی کی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT