Sunday , November 19 2017
Home / سیاسیات / گورنر اترپردیش کے خلاف اعظم خاں کے تبصروں پر تنازعہ

گورنر اترپردیش کے خلاف اعظم خاں کے تبصروں پر تنازعہ

اسمبلی میں تحریر اور تقریر کا اصل متن روانہ کرنے اسپیکر کو ہدایت
لکھنو ۔ 9 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) گورنر اترپردیش رام نائک نے آج ریاستی اسمبلی میں سینئر وزیر اعظم خاں کی تقریر کی سی ڈی اور تحریر کو بغیر کانٹ چھانٹ کے طلب کیا ہے جس میں یہ الزام عائد کیا گیا ہے کہ رام نائک اپنی پارٹی کے زیر اثر کام کر رہے ہیں ۔ا یوان میں کل وزیر پارلیمانی امور اعظم خاں اور دیگر بشمول اسپیکر ماتا پرساد پانڈے کے بعض ریمارکس کی رپورٹ اخبارات میں شائع ہونے پر از خود کارروائی کرتے ہوئے گورنر نے اسپیکر ماتا پرساد کو ا یک مکتوب روانہ کیا ہے اور یہ ہدایت دی کہ ان کے بارے میں کئے گئے ریمارکس سے متعلق اصل تحریری دستاویز اور ویڈیو ، آڈیو کی سی ڈی جلد از جلد فراہم کی جائے ۔ گورنر نے اپنے مکتوب میں بتایا کہ اعظم خاں اور دیگر ارکان نے اترپردیش نگر نگم ترمیمی بل 2015 ء کا حوالہ دیا ہے جس کے مطالعہ اور مشاہدہ کی ضرورت ہے۔ کچھ عرصہ قبل بھی اعظم خاں کی ریاستی گورنر کے ساتھ لفظی جھڑپ ہوگئی اور سماج وادی پارٹی لیڈر نے یہ الزام عائد کیا تھا ، وہ (نائک) ایک کرسیوک ہونے کے ناطے فرقہ وارانہ  ذہنیت رکھتے ہیں اور نریندر مودی حکومت کی ایماء پر اترپردیش کی حالات کو کشیدہ بنانے کی کوشش کر رہے ہیں،

جس پر رام نائک نے کہا کہ یقیناً وہ ایک آر ایسا یس کارکن ہیں لیکن ان کے اور حکومت اترپردیش کے درمیان باہمی تعاون کا جذبہ ہونا چاہئے تاکہ ملک گیر سطح پر ریاست کو سرفہرست مقابلہ دلوایا جاسکے۔ گزشتہ ماہ 4 صفحات پر مشتمل ایک مکتوب گورنر کو روانہ کرتے ہوئے اعظم خاں نے ان پر منفی رویہ اختیار کرنے کا الزام عائد کیا تھا اور یہ ادعا کیا تھا کہ رام نائک کے بعض بیانات کی وجہ سے انہیں دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ اعظم خاں نے خبردار بھی کیا تھا کہ وہ صدر جمہوریہ پرنب مکرجی سے شکایت کریں گے ۔ علاوہ ازیں اعظم خاں نے کل بھی گورنر پر یہ الزام عائد کیا تھا کہ اسمبلی میں منظورہ متعدد بلوں کی توثیق نہیں کر رہے ہیں جس سے یہ تاثر ملتا ہے کہ وہ ایک مخصوص پارٹی کے زیر اثر کام کر رہے ہیں۔ وزیر پارلیمانی امور نے کل اسمبلی میں بتایا تھا  کہ یو پی نگر نگم ترمیمی بل 2015 ء گزشتہ ایک سال سے گورنر کے پاس معرض التواء ہے جس کے ذریعہ مالیاتی دھاندلیوں میں ملوث میئرس(Mayors)  کو ہٹادیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر گورنر کو کوئی اعتراض ہو تو یہ بل تجاویز کے ساتھ واپس کیا جاسکتا ہے اور وضاحتیں طلب کی جاسکتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT