Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / گورنمنٹ اسکولس کو بند کرنے کے اقدام کی مخالفت

گورنمنٹ اسکولس کو بند کرنے کے اقدام کی مخالفت

حکومت کے فیصلہ کے خلاف احتجاج کرنے آل انڈیا سیو ایجوکیشن کمیٹی کا اعلان
حیدرآباد ۔ 7 مئی (سیاست نیوز) آل انڈیا سیو ایجوکیشن کمیٹی نے 14,014 گورنمنٹ اسکولس کو بند کردینے کے ریاستی حکومت کے فیصلہ پر سوال کیا اور کہا کہ اس طرح کے کسی اقدام کے خلاف آل انڈیا سیو ایجوکیشن کمیٹی کی جانب سے منڈل اور میونسپل سطح پر ایجی ٹیشن کیا جائے گا۔ آج یہاں ایک پریس کانفرنس سے مخاطب کرتے ہوئے پروفیسر پی ایل ویشویشور راؤ، ایم مدھو ایڈوکیٹ، کے وینکٹ ریڈی اور دیگر ارکان کمیٹی نے سوال کیا کہ حکومت نے کس بنیاد پر 14,014 گورنمنٹ اسکولس کو بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ دراصل حکومت کے جی تا پی جی مفت تعلیم کی فراہمی کی اساس پر اقتدار پر آئی ہے جبکہ حکومت انفراسٹرکچر کے فقدان کے نام پر اسکولس کو بند کرنے پر آمادہ ہے۔ اگر گورنمنٹ اسکولس میں انفراسٹرکچر کی کمی ہو تو حکومت کو درکار انفراسٹرکچر فراہم کرنا چاہئے۔ مسٹر ویشویشور راؤ نے کہا کہ آر ٹی آئی کے مطابق ہر ایک کیلو میٹر پر گورنمنٹ اسکول ہونا چاہئے۔ اسکولس کو بند کرنے کی وجوہات بتانے کا مطالبہ کرتے ہوئے ویشویشور راؤ نے کہا کہ تلنگانہ حکومت کے جی تا پی جی مفت تعلیم فراہم کرنے کے وعدہ پر برسراقتدار آئی ہے۔ اس کے بجائے اب حکومت اسکولس کو بند کررہی ہے اور یہ صرف خانگی اسکولس کی حوصلہ افزائی ہے جو غریبوں کی دسترس میں نہیں ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیا حکومت غریبوں کو تعلیم سے محروم کرنا چاہتی ہے اور تعلیمی نظام کو ختم کرنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو گورنمنٹ اسکولس کو بند کرنے کا حق نہیں ہے اس کے بجائے انہیں غریبوں کیلئے تعلیم کو یقینی بنانا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT