Saturday , April 21 2018
Home / سیاسیات / گوری لنکیش کا قتل انسانیت پر حملہ ‘ چیف منسٹر کرناٹک سدارامیا

گوری لنکیش کا قتل انسانیت پر حملہ ‘ چیف منسٹر کرناٹک سدارامیا

خاطیوں کو کیفر کردار تک پہونچانے کا عزم ۔ اسمبلی میں چیف منسٹر کرناٹک کا اظہار خیال

بیلگاوی ( کرناٹک ) 13 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) چیف منسٹر کرناٹک سدارامیا نے آج سینئر صحیفہ نگار گوری لنکیش کے قتل کو انسانیت پر حملہ قرار دیا اور کہا کہ ان کی حکومت اس بات کو یقینی بنائے گی کہ خاطیوں کو کیفر کردار تک پہونچایا جائے ۔ سدارامیا نے کرناٹک اسمبلی کے سرمائی اجلاس کے آج افتتاحی دن ایوان میں کہا کہ ریاستی حکومت خاطیوں کو کیفر کردار تک پہونچانے کی اپنی کوششوں میں دیانتدار ہے گوری لنکیش ایک مخالف حکومت نظریات رکھنے والی معروف صحیفہ نگار تھیں اور انہیں 5 ستمبر کو بنگلورو میں ان کے گھر کے باہر گولی مار کر قتل کردیا گیا تھا ۔ سدارامیا نے ایوان میں گوری لنکیش کو خراج پیش کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک بہیمانہ موت تھی ۔ یہ انسانیت پر حملہ تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اب تک ان افراد کو گرفتار نہیں کر پائے ہیں جنہوں نے گوری لنکیش کو قتل کیا ہے ۔ قاتلوں کو گرفتار کرنے کیلئے ایک خصوصی ٹیم تشکیل دی گئی ہے ۔ انہوں نے اسمبلی کو یہ بھی مطلع کیا کہ ایک اور معقولیت پسند شخصیت ایم ایم کلبرگی کے قاتلوں کا بھی پتہ نہیں چلایا جاسکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اور تحقیقاتی ٹیمیں ان خاطیوں کو گرفتار کرنے کی اپنی کوششوں میں دیانتدار ہیں۔ 77 سالہ کلبرگی کو نامعلوم افراد نے 30 اگسٹ 2015 کو دھرواڑ میں ان کی قیامگاہ پر گولی مار کر ہلاک کردیا تھا ۔ جنتادل ایس کے لیڈر وائی ایس وی دتا نے کہا کہ گوری لنکیش کا قتل عدم رواداری کی فائرنگ تھی جو ایک اظہار خیال کی آزادی پر چلائی گئی تھی ۔ قائد اپوزیشن جگدیش شٹر نے مطالبہ کیا کہ گوری لنکیش کے قاتلوں کو جلد گرفتار کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر داخلہ نے پہلے کہا تھا کہ تحقیقاتی ٹیموں کو ان قاتلوں کے کچھ سراغ دستیاب ہوئے ہیں بی جے پی لیڈر نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ اس مسئلہ پر وضاحت کرے ۔ انہوں نے کہا کہ کسی کو غیر ضروری طور پر ذمہ دار قرار دینے کی کوئی کوشش نہیں کی جانی چاہئے ۔ ریاستی وزیر داخلہ راما لنگا ریڈی نے ہفتہ کو کہا تھا کہ گوری لنکیش کے قاتلوں کو آئندہ چند ہفتوں میں یقینی طور پر گرفتار کرلیا جائیگا ۔ انہوں نے مزید بتایا تھا کہ خصوصی تحقیقاتی ٹیم کو ‘ جو اس کیس کی تحقیقات کر رہی ہے ‘ ان قاتلوں کے تعلق سے سراغ دستیاب ہوئے ہیں لیکن اس کا اس مرحلہ پر کوئی افشا نہیں کیا جاسکتا ۔ ریاستی حکومت نے ان قاتلوں کے تعلق سے کوئی بھی سراغ دینے والے کو 10 لاکھ روپئے انعام کا اعلان بھی کیا ہے ۔ ایس آئی ٹی کی جانب سے 14 اکٹوبر کو دو مشتبہ افراد کے خاکے جاری کئے گئے تھے اور ایک ویڈیو فوٹیج بھی جاری کیا گیا تھا جو اس کیس سے متعلق ہے ۔ ایوان میں گوری لنکیش کے علاوہ دیگر انتقال کرجانے والے ارکان کو بھی خراج پیش کیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT