Thursday , December 14 2017
Home / ہندوستان / گولڈن ٹمپل کے احاطہ میں خالصتانی نعرے

گولڈن ٹمپل کے احاطہ میں خالصتانی نعرے

آپریشن بلو اسٹار کی برسی کے موقع پر امرتسر میں بند
امرتسر ۔ 6 ۔ جون : ( سیاست ڈاٹ کام): گولڈن ٹمپل کے احاطہ میں آج شدت پسند تنظیم کے ارکان نے خالصتان موافق نعرے بلند کیے جب کہ سخت سیکوریٹی کے درمیان آپریشن بلو اسٹار کی 32 ویں برسی منائی گئی ۔ سنہرے مندر کے اطراف و اکناف سے کوئی ناخوشگوار واقعہ کی اطلاع نہیں ہے ۔ جہاں پر نظم و ضبط کو درہم برہم کرنے کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کے لیے ایس جی پی سی ٹاسک فورس کے ساتھ پولیس عملہ کو سادہ لباس میں متعین کیا گیا تھا ۔ امرتسر میں 8  ہزار سیکوریٹی اہلکار بشمول مرکزی فورسیس کو متعین کردیا گیا ۔ سابق ایم پی اور صدر شرومنی اکالی دل ( امرتسر ) سمرنجیت سنگھ مان کی زیر قیادت حامیوں نے خالصتان زندہ اباد اور پنجاب سرکار مردہ باد کے نعرے بلند کئے ۔ اس موقع پر اکالی تخت کے گراونڈ فلور پر ایک اجتماع کو مخاطب کرتے ہوئے انہوں نے یہ الزام عائد کیا کہ چیف منسٹر پرکاش سنگھ بادل سکھوں کے مذہبی اور ایس جی پی سی کے امور میں بیجا مداخلت کررہے ہیں ۔ مسٹر مان نے ایس جی پی سی سے کہا کہ سکھ مذہبی پیشوا بلبیر سنگھ کو باز مامور کیا جائے جنہوں نے حال ہی میں گولڈن ٹمپل میں چیف منسٹر کو ’ سروپا ‘ پیش کرنے سے انکار کردیا تھا ۔ جھتدار اکالی تخت گیانی گروبچن سنگھ نے بھی اس وقت کی مرکزی حکومت ( آپریشن بلو اسٹار کے وقت ) کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ عالمگیر سطح پر سکھ برادری ، آپریشن بلو اسٹار کے زخموں کو یاد رکھے گی ۔ انہوں نے کہا کہ 1984 میں فوجی کارروائی کے لیے جو لوگ ذمہ دار تھے آج روبہ زوال ہوگئے ہیں ۔ شہر امرتسر میں آج شدت پسند تنظیم دل خالصہ کی اپیل پر بند منایا گیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT