Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / گولکنڈہ کے بیش قیمتی ہیرے کی ہانگ کانگ میں نیلامی

گولکنڈہ کے بیش قیمتی ہیرے کی ہانگ کانگ میں نیلامی

ہانگ کانگ 13 مئی (سیاست نیوز) دنیا کے مشہور ہیروں اور نادر و نایاب زیورات کا ہراج کرنے والا مشہور و معروف ادارہ کرسٹی ہانگ کانگ 27 مئی کو نیلامی کا پروگرام منعقد کررہا ہے۔ اس منفرد ہراج میں دنیا کے ارب پتی مرد و خواتین ، تاجرین و صنعت کار اور شاہی خاندانوں کے ارکان اور ان کے نمائندے حصہ لیں گے ۔ زائد از 300 قیمتی نادر و نایاب اور نظروں کو

ہانگ کانگ 13 مئی (سیاست نیوز) دنیا کے مشہور ہیروں اور نادر و نایاب زیورات کا ہراج کرنے والا مشہور و معروف ادارہ کرسٹی ہانگ کانگ 27 مئی کو نیلامی کا پروگرام منعقد کررہا ہے۔ اس منفرد ہراج میں دنیا کے ارب پتی مرد و خواتین ، تاجرین و صنعت کار اور شاہی خاندانوں کے ارکان اور ان کے نمائندے حصہ لیں گے ۔ زائد از 300 قیمتی نادر و نایاب اور نظروں کو خیرہ کردینے والے ہیروں کی انگوٹھیاں، لاکٹس اور کان کی بالیاں بولی کیلئے پیش کی جائیں گی ۔ کرسٹی کو امید ہے کہ اس ہراج سے کم از کم 100 ملین ڈالرس کی خطیر رقم حاصل ہوگی ۔ مجوزہ آکشن میں ایک ایسے لاکٹ پر بھی بولی لگائی جائے گی جس کے Pendent میں نظروں کو خیرہ کردینے والا مشہور بیضوی حجم کا ہیرا Eye of Golconda نصب کیا گیا ہے ۔ اس کی غیر معمولی چمک اور دلفریبی کے باعث ہی سلاطین گولکنڈہ کی خدمت میں پیش ہونے والے جوہریوں نے اسے چشم گولکنڈہ کا نام دیا ہوگا۔ نیلامی میں مختلف رنگ و نور کے ایسے ہیرے بھی شامل ہیں جو نارنجی ، گہرے گلابی ، سرخی مائل ، گہرے آسمانی ، گہرے زردی مائل سبز ، بنفشی مائل سرمئی اور چمکیلے زرد رنگوں کے حامل ہیں۔ اس سیزن میں کرسٹی 9.38 قیراط بیضوی گلابی رنگ کے ہیرے کو نیلام کیلئے پیش کرنے والا ہے اور توقع ہے کہ اس ہیرے کی نیلامی سے کرسٹی آکشن پاور کو 45,000,000 ہانگ کانگ ڈالرس (65,000,000 امریکی ڈالرس) کی خطیر رقم حاصل ہوگی ۔ ایک اندازہ یہ بھی لگایا جارہا ہے کہ اِس ہیرے کی قیمت 8,3000,000 امریکی ڈالرس تک بھی پہونچ سکتی ہے۔

اس کے علاوہ نیلامی کیلئے لعل و یاقوت، نیلم، زمرد سے بنے نادر و نایاب زیورات بھی پیش کئے جارہے ہیں ۔ ساتھ ہی برما ، کولمبیا کی کانوں سے برآمد کردہ ہیروں کے زیورات کی بھی نیلامی عمل میں لائی جائے گی ۔ واضح رہے کہ مغربی دنیا میں عام لوگ اور حکمراں ہیروں کے بارے میں کوئی علم نہیں رکھتے تھے لیکن کہا جاتا ہے کہ فرانسیسی سیاح اور ہیروں کے تاجر جین باپٹسٹ ٹپورپٹر (1605-1689) نے 17 ویں صدی کے دوران مغرب کو ہیروں اور ان کی قدر و قیمت سے واقف کروایا ۔ جین ہاپٹسٹ ٹپورنیٹر نے ہندوستان کا دورہ کرتے ہوئے یہاں بڑے پیمانہ پر ہیروں کی خریداری کی ان ہیروں کی چمک سے فرانسیسی بادشاہ کا دربار روشن ہوگیا ۔ بادشاہ سے لے کر وہاں موجود تمام درباری ہندوستانی ہیروں کی چکاچوند سے اس قدر متاثر ہوئے کہ کچھ دیر تک ان کی آنکھیں پھٹی کی پھٹی رہ گئیں اور فرانسیسی دربار میں جو ہیرے چمک رہے تھے، دراصل گولکنڈہ کی کانوں سے نکالے کئے گئے ۔ گولکنڈہ کے ہیروں کو ہمیشہ معیاری و قیمتی ہیروں سے تعبیر کیا گیا ہے کیونکہ یہ ہیرے تمام نقائص سے پاک پانی کی طرح صاف و شفاف ہوا کرتے تھے جبکہ دنیا کے دیگر علاقوں میں پائے جانے والے ہیروں میں یہ کیفیت اور یہ معیار نہیں پایا جاتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT