Monday , September 24 2018
Home / دنیا / گوٹیرس کی مالدیپ میں قانون کی بالادستی قائم رکھنے کی اپیل

گوٹیرس کی مالدیپ میں قانون کی بالادستی قائم رکھنے کی اپیل

مالدیپ اپنے بحران کو حل کرنے کا اہل: چین

اقوام متحدہ۔7 فروری (سیاست ڈاٹ کام) مالدیپ میں ایمرجنسی کے اعلان اور فوجیوں کے ذریعہ سپریم کورٹ میں زبردستی داخل ہونے کے بعد اقوام متحدہ کے جنرل سکریٹری انٹونیو گوٹیرس نے مالدیپ کی حکومت سے ملک میں قانون کی بالادستی کو قائم رکھنے اور عوام کے لئے حفاظتی انتظامات فراہم کرنے کی اپیل کی۔اقوام متحدہ کے جنرل سکریٹری نے مالدیپ میں پیداشدہ حالات پر اپنے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا اور اپنے بیان میں،جس کو ان کے ترجمان اسٹیفن جوارک کے ذریعہ جاری کیا گیا، مالدیپ حکومت سے اپیل کی ہے کہ وہ ملک میں قانون کی بالادستی قائم کرے ،جلد از جلد ایمرجنسی ختم کی جائے ، ملک میں عوام اور عدلیہ کے ارکان کی حفاظت کے لئے تمام ممکنہ اقدام کئے جائیں۔میڈیا ذرائع کے مطابق ملک میں ایمرجنسی کے اعلان کے بعد سیکورٹی اہلکاروں نے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کو گرفتار کرلیا ۔ یہ بحران اس وقت پیدا ہوا جب سپریم کورٹ نے اپوزیشن کے 12 لیڈران کو رہا کرنے اور ان کی پارلیمنٹ میں واپسی کا حکم جاری کیا تھا۔چین نے بھی اُمید ظاہر کی ہے کہ مالدیپ حکومت اور اپوزیشن پارٹیاں ملک میں پیدا ہونے والے سیاسی بحران کو خود حل کرنے کی اہلیت رکھتی ہیں۔میڈیا رپورٹوں کے مطابق چینی وزارت خارجہ نے کہا کہ وہ مالدیپ کے واقعات پر نظر رکھے ہوئے ہے ۔ وزارت خارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ تمام متعلقہ فریق بات چیت کے ذریعہ اپنے اختلافات کو ختم کر سکتے ہیں اور اسی سے ملک میں جلد سے جلد سیاسی استحکام اور قومی وسماجی استحکام بحال ہو سکتا ہے۔ مسٹر شوانگ نے کہا کہ انہیں امید ہے کہ مالدیپ حکومت اور وہاں کی سیاسی پارٹیاں اس بحران کو ختم کرنے کی اہل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ یہ بھی چاہتے ہیں کہ مالدیپ اپنے ملک میں چینی شہریوں ، اداروں، پروجیکٹوں کو محفوظ بنانے کے لئے فوری اقدامات کرے ۔ مالدیپ میں صدر عبداللہ یامین کی طرف سے 15 دنوں کے لئے ایمرجنسی کا اعلان کرنے اور اہم اپوزیشن پارٹی کے لیڈروں کو رہا کرنے کا حکم دینے والے سپریم کورٹ کے ججوں کو گرفتار کرنے کے بعد سے سیاسی بحران مزید پیچیدہ ہوگیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT