Saturday , November 25 2017
Home / Top Stories / گوڈسے کی برسی پر ہندومہاسبھا کا ’’بلیدان دیوس‘‘

گوڈسے کی برسی پر ہندومہاسبھا کا ’’بلیدان دیوس‘‘

ویب سائیٹ اور کتاب بھی جاری ، آر ایس ایس اور بی جے پی کا اظہار لاتعلقی ، کانگریس کارکنوں کا احتجاج
نئی دہلی /   تھانے ۔ /15 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندو مہاسبھا نے آج گاندھی جی کے قاتل نتھورام گوڈسے کی 66 ویں برسی کو ’’بلیدان دیوس‘‘ کے طور پر منایا ۔ اس موقع پر گوڈسے کی زندگی کے بارے میں ویب سائیٹ کا بھی آغاز کیا گیا ۔ سینئر آر ایس ایس لیڈر نے گوڈسے کی سراہنا سے خود کو لاتعلق قرار دیا ہے ۔ دوسری طرف کانگریس کارکنوں نے تھانے میں گوڈسے کا پتلا نذر آتش کیا ۔ بی جے پی نے ہندو مہاسبھا کے اس پروگرام سے خود کو دور رکھا ۔ ہندو مہاسبھا کے صدر چندر پرکاش کوشک نے دہلی میں میڈیا کو بتایا کہ ملک بھر میں 100 مقامات پر آج بلیدان دیوس منایا گیا ہے ۔ ہندو مہاسبھا کی میرٹھ یونٹ نے گوڈسے کی زندگی کے بارے میں ویب سائیٹ کا آغاز کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دہلی میں گوڈسے کی زندگی اور اس کے نظریات پر مشتمل کتاب کا اجراء انجام دیا گیا ۔ گوڈے سے کو /15 نومبر 1949ء کو گاندھی جی کے قتل کا مجرم قرار دیتے ہوئے پھانسی دی گئی ۔ اس نے /30 جنوری 1948 ء کو گاندھی جی کا قتل کیا تھا ۔ آر ایس ایس لیڈر ایم جی ویدیا نے گوڈسے کی تعریف و سراہنا کی کسی بھی کوشش کو مسترد کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندو مہاسبھا کے ان پروگرامس کے بارے میں انہیں کوئی پتہ نہیں ہے لیکن وہ سمجھتے ہیں کہ گوڈسے کی تعریف اور اس کی سراہنا ٹھیک نہیں ۔ ویدیا نے کہا کہ گاندھی جی نے اپنی ساری زندگی آزادی کے بارے میں بیداری پیدا کی ۔ اس کا یہ مطلب نہیں کہ ہم ان کی پالیسیوں سے اتفاق کرتے ہیں ۔ بعض لوگ یہ کہتے ہیں کہ گوڈسے کی سراہنا کرنے میں ہندوتوا کا فخر ہے لیکن وہ کہتے ہیں کہ اس سے ہندوتوا کا امیج متاثر ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ گاندھی جی کے قتل کی وجہ سے بھی ہندوتوا پر اثر پڑا ۔ بی جے پی ترجمان شاہنواز حسین نے کہا کہ ان کی پارٹی گاندھی جی کے اصولوں اور فلسفے پر یقین رکھتی ہے اور گوڈسے کو قاتل تصور کرتی ہے ۔ بعض لوگ گوڈسے کی یوم پیدائش پر جشن مناتے ہیں لیکن بی جے پی کو مورد الزام قرار دیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ کانگریس کی اوچھی سیاست کی مثال ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس گاندھی جی کا نام استعمال کرتی ہے لیکن ان کے فلسفے کو فراموش کردیا ہے ۔ مہاراشٹرا کے ضلع تھانے میں کانگریس کارکنوں نے ہندومہاسبھا کے پروگرام اور اس کی تائید کرنے والوں کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے گوڈسے کا پتلا نذر آتش کیا ۔ وہ پلے کارڈس تھامے ہوئے تھے اور گوڈسے کے نام پر مندر بنانے ایک تنظیم کی کوششوں کی مذمت بھی کررہے تھے ۔ گزشتہ سال اس تنظیم نے گوڈسے کی یاد میں مندر تعمیر کرنے کا اعلان کیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT