Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / گٹلا بیگم پیٹ کی اوقافی اراضی کے تحفظ کیلئے ضروری قانونی اقدامات

گٹلا بیگم پیٹ کی اوقافی اراضی کے تحفظ کیلئے ضروری قانونی اقدامات

جناب زاہد علی خاں کی پیش کردہ اہم دستاویزات چیف ایگزیکٹیو آفیسر وقف بورڈ کے حوالے : ڈپٹی چیف منسٹر

حیدرآباد۔16 فبروری (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے گٹلا بیگم پیٹ کی اوقافی اراضی کے سلسلہ میں ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خان کی جانب سے فراہم کردہ اہم دستاویزات کو چیف ایگزیکٹیو آفیسر وقف بورڈ محمد اسد اللہ کے حوالے کیا تاکہ اراضی کے تحفظ کے سلسلہ میں عدالتی کارروائی میں مدد ملے۔ جناب زاہد علی خان نے 90 ایکڑ قیمتی اوقافی اراضی کے بارے میں کئی اہم دستاویزات ڈپٹی چیف منسٹر کے حوالے کیں جس میں یہ ثابت ہورہا ہے کہ مذکورہ اراضی وقف ہے اور غیر مجاز قابضین کے دعوے ناقابل قبول ہیں۔ گٹلا بیگم پیٹ کی اراضی کا مقدمہ سپریم کورٹ میں زیردوران تھا جہاں عدالت نے غیر مجاز قابضین کے ملکیت کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے وقف بورڈ کو ہدایت دی تھی کہ وہ نیا اعلامیہ جاری کرے اور دیگر فریقین کو دعوی پیش کرنے کا موقع فراہم کرے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے چیف ایگزیکٹیو آفیسر کو ہدایت دی کہ اراضی کے تحفظ کے سلسلہ میں تمام ضروری قانونی قدم اٹھائے جائیں اور عدالت میں وقف بورڈ کے دعوے کے حق میں ان دستاویزات کو پیش کیا جائے۔ وقف بورڈ نیا اعلامیہ جاری کرنے سے قبل فریقین کو نوٹس جاری کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے۔ فریقین کے جواب کی سماعت اور ان کی دستاویزات کا جائزہ لینے کے بعد ہی اراضی کے سلسلہ میں نیا اعلامیہ جاری کیا جائے گا۔ اس سلسلہ میں قانونی ماہرین سے مشاورت کی جارہی ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے وقف بورڈ کے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے سلسلہ میں کوئی کوتاہی نہ کی جائے اور ضرورت پڑنے پر نامور وکلاء کی خدمات حاصل کی جائیں۔ انہوں نے وقف بورڈ کی کارکردگی بہتر بنانے کا مشورہ دیا اور کہا کہ حکومت اسٹاف کی کمی دور کرنے کے لیے اقدامات کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور ان کی آمدنی میں اضافے کے ذریعہ مسلمانوں کی فلاح و بہبود پر رقومات خرچ کی جاسکتی ہیں۔ چیف ایگزیکٹیو آفیسر نے مذکورہ دستاویزات متعلقہ سیکشن کے حوالے کرتے ہوئے جائزہ لینے کی ہدایت دی۔ انہوں نے کہا کہ گٹلا بیگم پیٹ کے مقدمہ میں وقف بورڈ کو اہم کامیابی حاصل ہوئی ہے اور غیر مجاز قابضین اپنی دعوے داری پیش کرنے کیلئے ٹربیونل کا رخ کرسکتے ہیں۔ وقف بورڈ ٹربیونل میں اراضی کے سلسلہ میں موجود دستاویزات پیش کرتے ہوئے اپنی ملکیت ثابت کرے گا۔

TOPPOPULARRECENT