Wednesday , October 24 2018
Home / شہر کی خبریں / گٹلہ بیگم پیٹ وقف اراضی سے ناجائز قبضوں کی برخواستگی میں شدت

گٹلہ بیگم پیٹ وقف اراضی سے ناجائز قبضوں کی برخواستگی میں شدت

ریونیو اور پولیس عہدیداروں کو تعاون کی ہدایت، محمد محمود علی کا جائزہ اجلاس سے خطاب
حیدرآباد۔ 12مارچ (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے آج گٹلا بیگم پیٹ کی اوقافی اراضی کے تحفظ کے سلسلہ میں عہدیداروں کے ساتھ اجلاس منعقد کیا۔ اس موقع پر ریونیو اور پولیس عہدیداروں کو ہدایت دی گئی کہ وہ ناجائز قبضوں کی برخاستگی کے سلسلہ میں وقف بورڈ سے تعاون کریں۔ واضح رہے کہ حالیہ عرصہ میں گٹلا بیگم پیٹ میں تعمیری سرگرمیوں میں شدت پیدا ہوچکی ہے۔ وقف بورڈ کی جانب سے گزٹ نوٹیفکیشن کی اجرائی کی تیاریوں کے دوران غیر مجاز قابضین نے اپنی سرگرمیوں میں تیزی پیدا کردی۔ عارضی تعمیرات کی جگہ اب مستقل اور پکی تعمیرات کا آغاز ہوچکا ہے۔ مسجد کے قریبی علاقے تک غیر مجاز قابضین کی سرگرمیاں پہنچ چکی ہیں۔ قابضین نے نوٹیفکیشن کی اجرائی کی کوششوں کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا لیکن انہیں کوئی راحت نہیں ملی۔ وقف بورڈ نے باقاعدہ گزٹ نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے اور غیر مجاز قبضوں کی برخاستگی کے سلسلہ میں پولیس اور رینیو حکام سے تعاون حاصل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کلکٹر رنگاریڈی رگھونندن رائو اور سائبر آباد کے پولیس عہدیداروں کے ساتھ صورتحال کا جائزہ لیا۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے کہا کہ بورڈ کی جانب سے بارہا اس بات کی کوشش کی گئی کہ ناجائز قبضے برخاست کیے جائیں لیکن پولیس اور ریونیو حکام نے تعاون نہیں کیا۔ اب جبکہ باقاعدہ گزٹ نوٹیفکیشن جاری ہوچکا ہے، وقف بورڈ اراضی کو اپنی تحویل میں لینے کی مساعی کرے گا۔ انہوں نے کلکٹر اور پولیس عہدیداروں سے تعاون کی خواہش کی۔ محمد سلیم نے کہا کہ تمام دستاویزات کی روشنی میں گزٹ نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے اور اسے عدالت میں چیلنج نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے حکومت سے خواہش کی کہ وہ اوقافی جائیدادوں کی ترقی کے سلسلہ میں وقف بورڈ کو فنڈس جاری کرے۔ کلکٹر رنگاریڈی اور ڈپٹی کمشنر سائبرآباد نے تیقن دیا کہ اگر وقف بورڈ کی جانب سے انہیں مکتوب روانہ کیا جائے تو وہ قبضوں کی برخاستگی کے سلسلہ میں مکمل تعاون کریں گے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ پولیس کی جانب سے تعاون کی صورت میں غیر مجاز قابضین کی سرگرمیوں کو روکا جاسکتا ہے۔ انہوں نے عہدیداروں سے کہا کہ وہ مسجد کے اطراف جاری تعمیرات کو روکنے کارروائی کریں۔ اجلاس میں سکریٹری اقلیتی بہبود دانا کشور، حکومت کے مشیر برائے اقلیتی امور اے کے خان اور چیف ایگزیکٹیو آفیسر وقف بورڈ منان فاروقی نے شرکت کی۔

TOPPOPULARRECENT