Sunday , February 25 2018
Home / شہر کی خبریں / گٹلہ بیگم پیٹ کی اوقافی اراضی پر غیر مجاز تعمیرات جاری

گٹلہ بیگم پیٹ کی اوقافی اراضی پر غیر مجاز تعمیرات جاری

وقف بورڈ کے عہدیداروں کا دورہ، مقامی پولیس کا تعاون سے انکار
حیدرـآباد۔/3فبروری، ( سیاست نیوز) عید گاہ گٹلہ بیگم پیٹ کی 92 ایکر اوقافی اراضی کے تحفظ کے سلسلہ میں وقف بورڈ سے گزٹ نوٹیفکیشن کی اجرائی کے باوجود غیر مجاز قابضین کی جانب سے تعمیری سرگرمیوں کا سلسلہ جاری ہے۔ ہائی کورٹ نے غیر مجاز قابضین کو نامنظور کرتے ہوئے وقف بورڈ کے گزٹ نوٹیفکیشن کے حق میں احکامات جاری کئے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ گزٹ نوٹیفکیشن کی سرگرمیوں کے آغاز کے ساتھ ہی غیر مجاز قابضین نے اراضی پر تعمیرات کو تیز کردیا اور عارضی شیڈز تعمیر کرتے ہوئے ان کی حصار بندی کا کام جاری ہے۔ تعمیری سرگرمیوں کی اطلاع ملنے پر وقف بورڈ عہدیداروں کی ٹیم کو صدر نشین وقف بورڈ محمد سلیم نے گٹلہ بیگم پیٹ روانہ کیا لیکن ان کی آمد کے باوجود تعمیری سرگرمیاں جاری رہیں۔ عہدیداروں نے پولیس اسٹیشن مادھا پور پہنچ کر اس سلسلہ میں شکایت کی لیکن پولیس نے کسی بھی طرح کی مداخلت سے انکار کردیا۔ پولیس کے عدم تعاون کے رویہ سے غیر مجاز قابضین کے حوصلے بلند ہیں۔ پولیس اور ریونیو حکام کو تعمیری سرگرمیوں کو روکنے میں اہم رول ادا کرنے کی ضرورت ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ غیر مجاز قابضین نے اراضی کے مختلف حصوں کو دیگر خانگی کمپنیوں کو لیز پر دے دیا ہے لہذا لیز پر حاصل کرنے والے ادارے عدالتی احکامات کو ماننے سے انکار کررہے ہیں۔92 ایکر اراضی کے بیشتر حصوں پر قبضے ہوچکے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ ریونیو حکام نے وقف بورڈ عہدیداروں کو مشورہ دیا کہ وہ گزٹ نوٹیفکیشن کے ساتھ حکومت سے انہدامی کارروائی کے احکامات جاری کروائیں۔ مقامی افراد میں جاریہ تعمیری سرگرمیوں کے بارے میں ناراضگی پائی جاتی ہے۔ اُن کا کہنا ہے کہ وقف بورڈ کو صرف گزٹ نوٹیفکیشن کی اجرائی پر انحصار کے بجائے قبضوں کی برخواستگی اور اراضی کو تحویل میں لینے کیلئے ٹھوس اقدامات کرنے چاہیئے۔ اسی دوران صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے کہا کہ 92 ایکر اراضی کے تحفظ کے سلسلہ میں کوئی رکاوٹ نہیں ہے اور عدالتی احکامات کے بعد وقف بورڈ کا موقف مستحکم ہوچکا ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ حکومت کے تعاون سے غیر مجاز قبضوں کو برخواست کرنے میں مدد ملے گی۔

TOPPOPULARRECENT