Sunday , November 19 2017
Home / اضلاع کی خبریں / گڈناواگو پراجکٹ میں غرقاب دو نوجوانوں کی نعشیں دستیاب

گڈناواگو پراجکٹ میں غرقاب دو نوجوانوں کی نعشیں دستیاب

بھینسہ /12 ستمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) گذشتہ روز بھینسہ شہر کے گڈنا واگو پراجکٹ میں قریش برادری کے جواں سال دو مسلم نوجوان تیراکی کے دوران مچھیروں کے ٹپہ ( تھرماکول ) الٹ جانے سے غرقاب ہوگئے تھے ۔ جن کی نعشیں آج کافی جدوجہد کے بعد ماہر تیراکوں نے برآمد کی ۔ تفصیلات کے بموجب بھینسہ شہر کے گڈنا واگو پراجکٹ میں گذشتہ روز محمد ساجد قریشی 19 سالہ اویسی نگر بھینسہ اور سہیل قریشی 18 سالہ بالور موضع سیلو تعلقہ پربھنی ( مہاراشٹرا ) کا متوطن جو دینی مدرسہ میں حفظ قرآن کا متعلم تھا اور موضع بالور سے بھینسہ اپنی بہن و بہنوائی سے ملاقات کی غرض سے آیا ہوا تھا ۔ اس واقعہ کی وجہ سے گڈنا واگو پراجکٹ پر گذشتہ روز بھینسہ ڈی ایس پی اندے راملو کی نگرانی میں سرکل انسپکٹر اے رگھو سب انسپکٹر اے تروپتی اور اسسٹنٹ سب انسپکٹران محمد غوث اور سلیم خان نے غوتہ خوروں ( تیراکوں ) کی مدد سے نعشوں کو نکالنے کیلئے کافی کوشش کی اور محکمہ فائر کے عملہ کو طلب کیا ۔ اسی اثناء میں رات تاریکی ہونے پر شہر کے مسلم سیاسی قائدین و ذمہ داران جنہیں اعجاز احمد خان سابقہ نائب صدرنشین بلدیہ حفیظ اللہ خان ، سید باسط (کنٹراکٹر ) عبدالحاجی ۔ عبداللطیف ، عبدالماجد ( بڑا ماجد ) عبدالشبیر ۔ آصف عبدالحفیظ شاہی بنارسی ، عمر قریشی ، رسول قریشی ۔ مختار قریشی ، عبدالسمیع ، محمد رضی الدین ، شیخ اعجاز کے علاوہ اردو صحافیوں جن میں محمد کلیم الدین خالد ، اظہر احمد خان ، سید جاوید ، محسن ا حمد خان کے علاوہ دیگر نے روشنی کیلئے جنریٹر کے انتظامات کئے ۔ جس پر تیراکوں کے ذریعہ پراجکٹ میں نعشوں کی تلاش جاری تھی لیکن کافی رات ہونے پر بھی تلاش کے دوران نعشیں برآمد نہیں ہوئی ۔ بعد ازاں آج صبح شہر کے مسلم حرکیاتی نوجوانوں جن میں عبدالماجد ( بڑا ماجد ) محمد شبیر ، شیخ اعجاز کے علاوہ دیگر نے جذبہ انسانیت و ہمدردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے دیگر مقام کے ماہر تیراکوں ( غوطہ خور ماہرین ) کو باہر سے لاتے ہوئے پراجکٹ سے دو مذکورہ نعشوں کو نکالنے کیلئے متحرک کروا دیا ۔ جس پر ماہر تیراکوں نے کافی جدوجہد و محنتوں کے ذریعہ تقریباً دوپہر 1 بجے کے قریب پراجکٹ سے نعشوں کو برآمد کیا جہاں شہر کے مسلم عوام کا اژدھام نعشوں کو دیکھنے کیلئے امڈ پڑا تھا ۔ بعد ازاں دو نوجوانوں کی نعشوں کو بھینسہ گورنمنٹ ایریا ہاسپٹل بغرض پوسٹ مارٹم منتقل کیا گیا جہاں سب انسپکٹر آف پولیس اے تروپتی کے علاوہ اسسٹنٹ سب انسپکٹر محمد غوث نے نعشوں کا پنچنامہ کرتے ہوئے ایک کیس درج کیا ۔ پوسٹم مارٹم کی کارروائی کے دوران مذکورہ مسلم قائدین ، ذمہ داران اور صحافیوں نے اہم رول ادا کیا ۔ بعد پوسٹ مارٹم نعشوں کو ورثاء کے حوالے کردیا گیا ۔ واضح رہے کہ گذشتہ روز یہ افسوناک و غمزدہ واقعہ پیش آتے ہی شہر کے مسلم ذمہ داران و نوجوانوں نے کافی رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے نعشوں کی تلاش کیلئے پراجکٹ پر دھوپ کی شدت کو برداشت کرتے ہوئے منتظر دیکھے گئے جبکہ نعشوں کے برآمد ہونے پر پوسٹ مارٹم کے دوران دوپہر کی سخت دھوپ کی شدت کو برداشت کرتے ہوئے جذبہ ہمدردی و حرارت ایمانی کا مظاہرہ کرتے ہوئے جذبہ انسانیت کی قدیم روایت کو بھینسہ کے مسلمانوں نے پیش کیا ۔

TOPPOPULARRECENT