Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / گھریلو تشدد ، عصمت ریزی کا شکار خواتین کی بازآباد کاری

گھریلو تشدد ، عصمت ریزی کا شکار خواتین کی بازآباد کاری

اضلاع میں سکھی نامی ون اسٹامپ سنٹرس کے قیام کا کام جاری
حیدرآباد ۔ /20 فبروری (سیاست نیوز) گھریلو تشدد ، عصمت ریزی اور دیگر مظالم کی شکار صنف نازک کی امداد و بازآبادکاری کیلئے حکومت کی جانب سے تمام اضلاع کے مستقر میں سکھی نامی (ون ۔ اسٹاپ سنٹرس) مراکز کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے ۔ واضح ہو کہ ریاستی سطح پر عام طور سے کہیں نہ کہیں ایسے واقعات رونما ہوتے ہی رہتے ہیں اور ایسی متاثرہ خواتین کو بھی ، قانونی اور رہائش امداد کے علاوہ انہیں کونسلنگ کے ذریعہ عام زندگی کے دھارے میں شامل کرنے کی کوشش کی جائے گی ۔ متاثرہ لڑکیاں یا خواتین ان سنٹرس سے راست طور پر رجوع ہوسکتی ہے جہاں سنٹرس کے ذمہ دار متاثرات کو مذکورہ تمام امداد کی فراہمی کے ساتھ ساتھ ملزمین کے خلاف قانونی چارہ جوئی بھی کریں گے اور ان سکھی سنٹرس سے نہ صرف خواتین بلکہ مظالم کے شکار بچے بھی ان سنٹرس میں شکایات درج کراسکتے ہیں ، ان تمام مراکز کے انتظامی امور کی ذمہ داری مرکزی محکمہ بہبود خواتین و اطفال کی ہے ۔ مرکزی حکومت کی جانب سے ایک سنٹر کو 50 لاکھ کا گرانٹ جاری کیا جارہا ہے اور اس رقم سے مستقل عمارت تعمیر کرتے ہوئے خدمات کا آغاز کیا جائے گا ۔ ریاستی حکومت نے تمام 31 اضلاع میں ان سنٹرس کا قیام عمل میں لانے کا ارادہ کیا ہے اور ریاستی انتظامیہ کی جانب سے مرکزی حکومت کو ان مراکز کے قیام سے متعلق رپورٹ بھی روانہ کردی گئی ہے ۔ مگر مرکزی حکومت نے سوائے حیدرآباد کے قدیم 9 اضلاع کی مناسبت سے ہی منظوری دی ہے ۔ اس منظوری کے بعد ریاستی محکمہ بہبود خواتین و اطفال کی جانب سے قدیم اضلاع عادل آباد ، نظام آباد ، کریم نگر ، محبوب نگر ، سنگاریڈی ، رنگاریڈی ، ورنگل ، کھمم ، نلگنڈہ میں ان مراکز کے قیام سے متعلق اقدامات کا آغاز کیا جاچکا ہے ۔ اس دوران مرکزی حکومت نے مزید 8 سنٹرس کے قیام کیلئے ہری جھنڈی دکھادی ہے اور اس مناسبت سے اضلاع یادادری ، کوتہ گوڑم ، جگتیال ، کاماریڈی ، ناگرکرنول ، سدی پیٹ ، منچریال ، اور جنگاما میں بھی سنٹرس کا قیام عمل میں آئے گا ۔ مکمل پراجکٹ کی ریاستی ڈائرکٹر بی گریجاکنے کے مطابق آئندہ تلنگانہ کے تمام اضلاع میں سکھی سنٹرس قائم ہوجائیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT