Wednesday , July 18 2018
Home / کھیل کی خبریں / گھر کے شیر باہر ڈھیر

گھر کے شیر باہر ڈھیر

TOPSHOT - South African bowler Morne Morkel (C) celebrates the dismissal of Indian batsman Cheteshwar Pujara (Bottom L) during the second day of the second Test cricket match between South Africa and India at Supersport cricket ground on January 14, 2018 in Centurion, South Africa. / AFP PHOTO / GIANLUIGI GUERCIA (Photo credit should read GIANLUIGI GUERCIA/AFP/Getty Images)

ہندوستان کو دوسرے ٹسٹ اور سیریز میں شکست

سنچیورین ۔ 17 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) گھریلو میدانوں پر ناقابل تسخیر رہنے والی ہندوستانی ٹیم کے بیٹسمین میزبان جنوبی آفریقی فاسٹ بولروں کا جواب دینے میں ناکام رہے اور اسے یہاں کھیلے گئے دوسرے ٹسٹ میں 135 رنز کی شکست برداشت کرنی پڑی جس کے بعد ویراٹ کوہلی کی زیرقیادت عالمی نمبر ایک ٹیم کا 9 سیریزوں میں ناقابل تسخیر رہنے کا ریکارڈ بھی چکنا چور ہوچکا ہے۔ پہلے ٹسٹ میں 72 رنز کی شکست دینے کے بعد ہندوستانی ٹیم نے جنوبی آفریقہ کے خلاف تین مقابلوں کی سیریز 2-0 سے گنوا دی ہے اور سیریز میں ہنوز ایک مقابلہ باقی ہے۔ روہت شرما کی جانب سے بنائے جانے والے 47 رنز ہندوستان کی دوسری اننگز میں تنہا مقابلہ ثابت ہوا جیسا کہ ٹیم 287 رنز کے مطلوبہ نشانہ کا تعاقب کررہی تھی۔ گزشتہ روز ہی ہندوستانی ٹیم اپنے تین اہم وکٹوں کے زوال کے بعد بحران کا شکار ہوچکی تھی اور آج وہ 50.2 اوورس میں 151 رنز پر ڈھیر ہوگئی اور نمبر ایک ٹیم کسی بھی زاویہ سے میزبان بولروں کا مقابلہ کرتی دکھائی نہیں دی۔ فاف ڈوپلیسی کی زیرقیادت آفریقی ٹیم کیلئے یہ بہترین بدلہ رہا کیونکہ 2015ء میں جب آفریقی ٹیم نے ہندوستان کا دورہ کیا تھا تو اسے 3-0 کی شکست برداشت کرنی پڑی۔ پہلا مقابلہ کھیل رہے فاسٹ بولر لنگی گیڈی ہندوستانی بیٹسمنوں کیلئے سب سے بڑا خطرہ ثابت ہوئے اور انہوں نے 12.2 اوورس میں 39 رنز کے عوض 6 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی۔ اسٹوک کے انتخاب سے لے کر وکٹوں کے درمیان دوڑ لگانے میں ہندوستانی بیٹسمین ناکام رہے جیسا کہ چیٹیشور پجارا ایک ہی مقابلہ کی 2 اننگز میں رن آؤٹ ہونے والے پہلے ہندوستانی بیٹسمین بنے اور وہ اس منفی ریکارڈ میں 18 سال بعد ایک اور نام درج کروایا ہے جیسا کہ آخری مرتبہ 2000ء میں نیوزی لینڈ کے سابق کپتان اسٹیون فلیمنگ رن آؤٹ ہوئے تھے۔ دریں اثناء لنگی ایسے چھٹے آفریقی فاسٹ بولر بنے جنہوں نے اپنے پہلے ہی مقابلے میں 5 یا اس سے زائد وکٹیں حاصل کی ہوں کیونکہ 1996ء میں ہندوستان میں لانس کلوسنر نے 8/62، چارلس لنگا ویلٹیڈ نے 2005ء میں انگلینڈ میں 5/46، ورنان فلینڈر 2011ء آسٹریلیا میں 5/15، مرچنٹ ڈی لانچ نے 2011ء سری لنکا میں 7/81 اور کائل ابوٹ نے 2013ء پاکستان کے خلاف 7/29 کا مظاہرہ کیا ہے۔ ایک موقع پر ہندوستانی ٹیم 81/7 کی نازک صورتِ حال سے پریشان تھی تاہم پارتھیو پٹیل (19) ، محمد سمیع 24 گیندوں میں 5 چوکوں کی مدد سے 28 رنز اسکور کرتے ہوئے ٹیم کے اسکور کو 150 رنز سے آگے بڑھایا ۔دیگر بولروں میں دوسرے سیاہ فام بولر ربادا بھی ہندوستان کیلئے مشکل بولر ثابت ہوئے جنہوں نے47 رنز کے عوض 3 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا ۔ لنگی کو شاندار بولنگ پر ’’مین آف دی میچ‘‘ قرار دیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT