Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / گیارہ اضلاع کیلئے وقف بورڈ سے 8 کروڑ کی اجرائی،عیدگاہ ، قبرستان ، مساجد اور وقف اراضیات کی حصار بندی پر زور ، چیرمین تلنگانہ وقف بورڈ کا بیان

گیارہ اضلاع کیلئے وقف بورڈ سے 8 کروڑ کی اجرائی،عیدگاہ ، قبرستان ، مساجد اور وقف اراضیات کی حصار بندی پر زور ، چیرمین تلنگانہ وقف بورڈ کا بیان

حیدرآباد۔23 اکٹوبر (سیاست نیوز) صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے ریاست کے 11 اضلاع میں وقف بورڈ کی جانب سے گرانٹ ان ایڈ کے طور پر 8 کروڑ روپئے جاری کیے ہیں۔ انہوں نے آج اس سلسلہ میں کارروائی کرتے ہوئے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ اضلاع کے لیے منظور کردہ رقم فوری طور پر جاری کردی جائے۔ شہر اور اضلاع میں عیدگاہوں، قبرستان اور مساجد کی اوقافی اراضیات کے تحفظ کے لیے گرانٹ ان ایڈ جاری کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کئی مقامات پر اوقافی اراضی کی حصاربندی نہ ہونے کے سبب غیر مجاز قابضین کو موقع فراہم ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گرانٹ ان ایڈ کے لیے جو رقم منظور کی گئی ان میں زیادہ تر اوقافی اراضی کی حصاربندی پر خرچ کی جائے گی۔ حیدرآباد میں مختلف اداروں کو 40 لاکھ روپئے جاری کیے گئے۔ اس کے علاوہ جگتیال 2 کروڑ 8 لاکھ، کریم نگر 60 لاکھ، محبوب نگر 57 لاکھ 50 ہزار، میدک 16 لاکھ، نلگنڈہ 40 لاکھ 50 ہزار، نظام آباد 90 لاکھ، رنگا ریڈی 20 لاکھ، وقار آباد 9 لاکھ، ونپرتی 20 لاکھ اور ورنگل رورل 39 لاکھ 90 ہزار روپئے منظور کیے گئے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے انیس الغربا کی تعمیر کے لیے مزید ایک کروڑ روپئے کی اجرائی کے احکامات جاری کیے۔ اس کے علاوہ مکہ مسجد کی چھت کی مرمت کے سلسلہ میں آرکیالوجیکل سروے آف انڈیا کو ایک کروڑ روپئے منظور کیے گئے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے 240 مطلقہ خواتین کے لیے 22 لاکھ 70 ہزار 796 روپئے کی اجرائی عمل میں لائی ہے۔ حکومت نے جاریہ سال وقف بورڈ کو گرانٹ ان ایڈ کے طور پر رقم جاری نہیں کی لیکن صدرنشین وقف بورڈ نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ اور مطلقہ خواتین کی امداد کی اہمیت کو پیش نظر رکھتے ہوئے بورڈ میں موجودہ رقم کو جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ محمد سلیم نے کہا کہ جائیدادوں کا تحفظ ان کی اولین ترجیح ہے اور حصار بندی کے سلسلہ میں دیگر مقامات سے جو درخواستیں موصول ہوں گی انہیں ترجیحی بنیادوں پر منظوری دی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT