Friday , May 25 2018
Home / ہندوستان / گیسٹ ہاؤس میں بیٹھ کر انتظار کرنے سے مسئلہ حل نہیں ہوگا

گیسٹ ہاؤس میں بیٹھ کر انتظار کرنے سے مسئلہ حل نہیں ہوگا

جموں وکشمیر پر مرکز کے مذاکرات کار دنیشور شرما کو عمر عبداﷲ کا مشورہ
سری نگر۔ 8 نومبر۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) جموں وکشمیر کے سابق چیف منسٹر اور نیشنل کانفرنس کے کارگذار صدر عمر عبداللہ نے مرکزی حکومت کے مذاکرات کار دنیشور شرما سے کہا کہ گیسٹ ہاؤس میں بیٹھ کر لوگوں کا انتظار کرنے سے بات چیت کا سلسلہ صحیح سمت میں آگے بڑھ نہیں سکتا۔ انہوں نے کہا کہ اہلیان جموں وکشمیر چاہتے ہیں کہ مسئلہ کشمیر بات چیت کے ذریعے ہی حل ہو۔ عمر عبداللہ نے ان باتوں کا اظہار چہارشنبہ کے روز اپنی رہائش گاہ پرمذاکرت کار دنیشور شرما سے ملاقات کے بعد نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا ’’انہوں نے (مسٹر دنیشور نے) پیغام بھیجا تھا کہ وہ ملنا چاہتے ہیں۔ انہیں جو کام سونپا گیا ہے ، انہوں نے اس کے بارے میں مجھے بتایا۔انہوں نے مجھ سے میری رائے پوچھی کہ وہ اپنے کام کو کس طرح صحیح طریقے سے انجام دے سکتے ہیں۔ کس طرح وہ اپنے مشن کو آگے لے جاسکتے ہیں۔ میں نے ان سے جو کہا، وہ ہمارے درمیان ہے‘‘۔نیشنل کانفرنس کارگذار صدر نے کہا کہ گیسٹ ہاوس میں بیٹھ کر لوگوں کا انتظار کرنے سے بات چیت کا سلسلہ صحیح سمت میں آگے بڑھ نہیں سکتا۔ انہوں نے کہا میں امید کرتا ہوں کہ جو تجویز میں نے ان کے سامنے رکھی، وہ اس پر عمل کریں گے ۔یہ پوچھے جانے پر کیا دونوں کے درمیان خودمختاری پر بات ہوئی، تو عمر عبداللہ نے کہا میں نے دنیشور شرما کے ساتھ اکیلے میں بات کی۔ میری پارٹی کو ابھی تک ان کی طرف سے دعوت نامہ نہیں ملا ہے ۔ اگلی بار جب نیشنل کانفرنس کا کوئی وفد دنیشور شرما سے ملاقات کرے گا تو اس وقت ہم اندرونی خودمختاری اور نیشنل کانفرنس کے سیاسی ایجنڈے پر بات کریں گے ۔ فی الحال میں نے ایسی کوئی بات نہیں کی۔سابق چیف منسٹر نے الزام لگایا کہ مرکزی سرکار نے خود دنیشور شرما کے ’کشمیر مشن ‘کے بارے میں غلط فہمیاں پیدا کیں۔ انہوں نے کہا میں امید کرتا ہوں کہ مرکزی حکومت کی طرف سے دنیشور شرما کے مشن کے بارے میں جو غلط فہمیاں پیدا کی گئیں، اور خود ان کے موقف کو گھٹا دیا گیاخاص کر وزیر اعظم کے دفتر اور وزارت داخلہ کی طرف سے ، اس کو درست کیا جائے گا۔دنیشور شرما کے مشن میں جو رکاوٹیں مرکز کی طرف سے حائل کی گئیں، ان رکاوٹوں کو دور کیا جائے گا۔ ابھی تک مرکزی حکومت نے دنیشور شرما کے کام کو آسان بنانے کے بجائے مزید مشکل بنادیا ہے۔ عمر عبداﷲ نے وزیراعظم پاکستان کے حالیہ تبصرہ کے پس منظر میں حریت کانفرنس سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ آزاد کشمیر پر اپنا موقف واضح کرے ۔

TOPPOPULARRECENT