Tuesday , January 16 2018
Home / شہر کی خبریں / ہائی کورٹ کے احاطے میں عالیشان مسجد محمدیہ کا افتتاح

ہائی کورٹ کے احاطے میں عالیشان مسجد محمدیہ کا افتتاح

جسٹس ایل نرسمہا ریڈی کی خصوصی دلچسپی سے تعمیر نو کی تکمیل ، 150 مصلیوں کی گنجائش

جسٹس ایل نرسمہا ریڈی کی خصوصی دلچسپی سے تعمیر نو کی تکمیل ، 150 مصلیوں کی گنجائش
حیدرآباد ۔ 21 ۔ جولائی : ( ابوایمل ) : ماہ صیام کی آمد کے ساتھ ہی مسجدوں کی آہک پاشی اور تزئین نو کا عمل اہل اسلام کا ایک قدیم اور روایتی طریقہ کار رہا ہے جس کی وجہ سے خانہ خدا میں عبادت و ریاضت کے شغف میں مزید اضافہ ہوجاتاہے ۔ تاہم یہی کام اگر کسی انصاف پسند اور سیکولر شخصیات کی جانب سے مسلمانوں کے لیے انجام دیا جائے تو مسلمانوں کی خوشی کا کوئی ٹھکانہ نہیں رہتا ۔ دراصل گذشتہ دنوں یعنی 19 جولائی کی شام آندھرا پردیش ہائی کورٹ جو کہ اب دونوں ریاستوں کا مشترکہ ہائی کورٹ ہے ۔ میں یہی خوش کن نظارہ دیکھنے کو ملا جہاں جسٹس ایل نرسمہا ریڈی اور رجسٹرار مینجمنٹ مسٹر ودیا دھر بھٹ کی خصوصی دلچسپی کی وجہ سے ہائی کورٹ کے احاطے میں ایک خوبصورت مسجد کا افتتاح عمل میں آیا ۔ دراصل مذکورہ ہائی کورٹ سے متصل قدیم سرکاری زچگی خانہ تھا جسے ہائی کورٹ نے اپنے توسیعی منصوبے کے تحت اپنی تحویل میں لے لیا تھا مگر اس زچگی خانہ کے احاطے میں پہلے سے ہی ایک مسجد ، مسجد محمدیہ موجود تھی اور ایک درگاہ سید سعادت بغدادیؒ بھی موجود ہے ۔ یہ مسجد قبل ازیں ٹین شیڈ کی ایک چھوٹی سی مسجد تھی ۔ جو یہاں کے مسلم ملازمین کے لیے ناکافی تھی ، تاہم ہائی کورٹ نے جب اس احاطے کو اپنی تحویل میں لیا تو محصلہ پورے احاطے کے ساتھ مسجد محمدیہ کی بھی تزئین نو کا فیصلہ کیا ۔ اس کے لیے جسٹس ہائی کورٹ جناب ایل نرسمہا ریڈی اور رجسٹرار مینجمنٹ مسٹر ودیا دھر بھٹ نے خصوصی طور پر دلچسپی لے کر مسجد کی تزئین کے ساتھ ساتھ تعمیر نو کا کام بھی کروایا جس سے یہ مسجد اب نہ صرف مزید خوبصورت ہوگئی ہے بلکہ اب اس میں تقریبا 150 مصلیوں کے لیے گنجائش پیدا ہوگئی ہے ۔ اس خوبصورت اور قدیم ترین مسجد کا 19 جولائی کی شام شیخ الحدیث جامعہ نظامیہ محترم خواجہ شریف صاحب کے ہاتھوں افتتاح عمل میں آیا ۔ اس موقع پر جسٹس ایل نرسمہا ریڈی اور مسٹر ودیا دھر بھٹ بھی خصوصی طور پر موجود تھے ۔ جسٹس موصوف نے خصوصی طور پر مسجد اور درگاہ شریف کا معائنہ کیا اور اپنی بے انتہا خوشی کا اظہار کیا ۔ اس موقع پر انہوںنے شیخ الحدیث جامعہ نظامیہ خواجہ شریف صاحب کی گلپوشی بھی کی اور شال پیش کیا ۔ مذکورہ شخصیات کے علاوہ کنٹراکٹر محمد نصیب خاں اور ہائی کورٹ کے مسلم اسٹاف کی ذاتی دلچسپی کی وجہ سے پائے تکمیل کو پہنچنے والی اس مسجد کی وجہ سے ہائی کورٹ کے مسلم ملازمین وکلاء اور دیگر مسلم اسٹاف کو کافی سہولت ہوگی ۔ اس موقع پر مسجد کی دیکھ بھال اور نگرانی کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے ۔ جس میں جناب عثمان شہید ایڈوکیٹ ہائی کورٹ کو صدر مقرر کیا گیا ہے جب کہ جناب مرزا نثار احمد بیگ نظامی ، محمد ثنا اللہ انصاری ، محمد محمود خاں ، سید ریاض ، سید ملتانی پاشاہ قادری ، شیخ سیف اللہ ، محمد نذیر الدین ، محمد یونس ، مرزا محبوب علی بیگ ، محمد عظیم الدین وغیرہ اراکین مسجد کی حیثیت سے شامل ہیں ۔ جسٹس ایل نرسمہا ریڈی نے صدر مسجد اور ہائی کورٹ کے سینئیر ایڈوکیٹ عثمان شہید ، محمد نعمت اللہ ایڈوکیٹ وقف بورڈ اور کنٹراکٹر محمد نصیب خاں کی بھی گلپوشی کی ۔ اس موقع پر ایڈوکیٹ کریم الدین شکیل اور محمد احمد شریف صدر سیکولر سوسائٹی بھی موجود تھے ۔ اس موقع پر ہائی کورٹ کے اسٹاف اور مسجد کمیٹی کی جانب سے پر تکلف طعام کا اہتمام کیا گیا تھا ۔۔

TOPPOPULARRECENT