Wednesday , December 13 2017
Home / جرائم و حادثات / ہائی کورٹ ہال سے قیمتی کتب کا سارق وکیل گرفتار

ہائی کورٹ ہال سے قیمتی کتب کا سارق وکیل گرفتار

144 کتب برآمد ، خفیہ کیمروں سے کتب اور فائیلوں کا سرقہ بے نقاب
حیدرآباد۔ 21 ۔ مارچ ( سیاست نیوز) حیدرآباد ہائیکورٹ کے مختلف کورٹ ہالس سے قانونی کتابیں اور دیگر مواد کے سرقہ میں ملوث ایک وکیل کو چارمینار پولیس نے گرفتار کر لیا۔ 39 سالہ جی گنگا وینو گوپالا کرشنا ساکن نیو سنتوش نگر کالونی جس کا تعلق آندھراپردیش کے ضلع مشرقی گوداوری سے ہے اور وہ گزشتہ چند عرصہ سے ہائیکورٹ کے مختلف عدالتوں کے احاطہ سے قیمتی قانونی کتابوں کا سرقہ کر رہا تھا۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ساؤت زون وی ستیہ نارائنا نے بتایا کہ 17 مارچ کو ہائیکورٹ کے اٹنڈر ایس سنجیویا نے ہائیکورٹ کی سیکوریٹی کیلئے متعین تلنگانہ اسپیشل پولیس فورس کے سب انسپکٹر جی ستیہ کو یہ واقف کروایا کہ کورٹ ہال نمبر 13 سے “AIR” مینول کتابیں اور دیگر کیس فائلس غائب ہیں۔ پولیس نے فوری احاطہ ہائیکورٹ کے مختلف سی سی ٹی وی کیمروں کا تجزیہ کیا جس میں سفید شرٹ میں ملبوس ایک شخص کتابوں کا سرقہ کرتا ہوا دیکھا گیا۔ ہائیکورٹ کے رجسٹرار جنرل اور دیگر ججس نے احاطہ ہائیکورٹ میں سرقہ کی واردات کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے متعلقہ پولیس کو اس سلسلہ میں سخت کارروائی کیلئے ہدایت دی۔ چارمینار پولیس نے سی سی ٹی وی کیمر وں کی مدد سے ایڈوکیٹ جی گنگا وینو گوپالا کرشنا کو حراست میں لے لیا اور اس کی تفتیش کی جس میں یہ انکشاف ہوا کہ وہ گزشتہ ایک سال سے ہائیکورٹ کے مختلف کورٹ ہال سے 144 قانونی کتابوں کے سرقہ میں ملوث تحقیقات کے دوران پولیس کو یہ معلوم ہوا کہ گرفتار وکیل نے راجمندری سے اپنی قانونی ڈگری حاصل کی تھی اور 2008 ء تک کاکیناڈا میں اس نے وکالت کی اور بعد ازاں سرپور کاغذ نگر پیپر ملز میں قانونی مشیر کی حیثیت سے خدمات انجام دی لیکن سال 2012 ء میں یہ فیکٹری بند ہونے پر وہ اپنے ارکان خاندان کے ہمراہ حیدرآباد منتقل ہوکر سنتوش نگر علاقہ میں کرایہ کا مکان حاصل کیا۔ زندگی گزارنے کیلئے معقول آمدنی نہ ہونے اور موکلین حاصل کرنے میں ناکامی کے سبب اس نے احاطہ ہائیکورٹ سے قیمتی قانونی کتابوں کا سرقہ کر کے اپنے دفتر میں سجادیا تاکہ موکلین کو متاثر کیا جاسکے۔ تفتیش کے دوران گرفتار ایڈوکیٹ نے بتایا کہ اس نے گزشتہ ایک سال میں ہائیکورٹ کے کورٹ ہال نمبر 4 ، 5 ، 6 ، 13 ، 17 ، 18 ، 19 ، 21 ، 33 اور 37 سے قیمتی کتابوں کا سرقہ کیا تھا۔ چارمینار پولیس نے وکیل کے مکان پر دھاوا کرتے ہوئے مسروقہ کتابیں ضبط کرتے ہوئے اسے جیل منتقل کردیا۔

TOPPOPULARRECENT