Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ہارٹی کلچر یونیورسٹی کے طلبہ کی بھوک ہڑتال پولیس کے ذریعہ ختم

ہارٹی کلچر یونیورسٹی کے طلبہ کی بھوک ہڑتال پولیس کے ذریعہ ختم

حیدرآباد2اگست (یواین آئی )ہارٹی کلچر افسر وں کو مقرر کرنے کامطالبہ کرتے ہوئے شہر حیدرآباد کی راجندرنگر میں واقع کونڈالکشمن باپوجی ہارٹی کلچر یونیورسٹی کے طلبہ کی 29دنوں سے جاری غیر معینہ مدت کی بھوک ہڑتال کو پولیس نے کل رات دیر گئے پہنچ کر زبردستی طورپر ختم کرواتے ہوئے طلبہ کو حراست میں لے کر نارسنگی ، میلار دیو پلی ، راجندر نگر ،شمس آباد،معین آبادپولیس اسٹیشنس منتقل کردیا ۔تلنگانہ تلگودیشم کے کارگزار صدر ریونت ریڈی کے طلبہ سے ملاقات اور ان سے یگانگت کے لئے آنے سے پہلے پولیس نے یہ کارروائی کی۔تقریبا تین ہزار پولیس ملازمین کل رات پہنچے اور لڑکوں کے ساتھ ساتھ لڑکیوں کے ہاسٹلس پہنچ کر ان کو زبردستی طورپر حراست میں لے لیا۔بتایاجاتاہے کہ پولیس نے یونیورسٹی کے اساتذہ کو پولیس اسٹیشن طلب کرتے ہوئے ان پرطلبہ کے خلاف شکایت کرنے کے لئے دباو بھی ڈالا۔یونیورسٹی کے طلبہ کی حمایت کے لئے آنے والے محبوب نگر کے 160طلبہ کو پولیس نے واپس بھیج دیا۔پولیس کی اچانک اس کارروائی کی طلبہ نے مذمت کی جنہوں نے الزام لگایا کہ ان کو ذہنی طور پر پولیس نے ہراساں کیا ہے ۔ا نہوں نے پولیس کارروائی کو غیر انسانی قرار دیا۔

TOPPOPULARRECENT