ہاسٹل وارڈن کی ہراسانی پر طالبہ کا اقدام خودکشی

حیدرآباد۔/11اکٹوبر، ( سیاست نیوز) سائبر آباد کے علاقہ میں کارپوریٹ ہراسانی کا ایک واقع پیش آیا جہاں ہاسٹل وارڈن کی ہراسانی کا شکار طالبہ نے چھلانگ لگادی۔ تاہم اس طالبہ کی حالت تشویش ناک بتائی گئی ہے جو ایک ہاسپٹل میں زیر علاج ہے۔ یہ واقعہ پیٹ بشیرآباد پولیس حدود میں پیش آیا۔ 20 سالہ طالبہ سندھیا جو ملا ریڈی انجینئرنگ کالج کی طالبہ یہاں کالج کے ہاسٹل میں رہتی تھی جس کا آبائی مقام جگتیال بتایا گیا ہے۔ ہاسٹل کے وارڈن نے اس طالبہ پر سرقہ کا الزام لگاتے ہوئے اس کے قبضہ سے 1500 روپئے چھین لیا اور ساتھی طالبات میں تقسیم کردیا۔ اس بات سے دلبرداشتہ سندھیہ ہراسانی اور رسوائی کے سبب ذہنی تناؤ کا شکار ہوگئی اور عمارت کی چوتھی منزل سے چھلانگ لگاکر انتہائی اقدام کیا۔ ہاسپٹل میں زیر علاج سندھیا کی حالت تشویشناک بتائی گئی ہے۔ پولیس پیٹ بشیر آباد نے مقدمہ درج کرلیا ہے اور مصروف تحقیقات ہے۔

TOPPOPULARRECENT