Thursday , April 26 2018
Home / کھیل کی خبریں / ہالیپ اور شاراپوا کی پیشقدمی

ہالیپ اور شاراپوا کی پیشقدمی

 

میلبورن۔16جنوری(سیاست ڈاٹ کام )سابق عالمی نمبر ایک سربیائی ٹینس اسٹار نواک جوکووچ نے اپنی فٹنس خدشات کو پیچھے چھوڑتے ہوئے سال کے پہلے گرانڈ سلام آسٹریلین اوپن میں آسان کامیابی کے ساتھ دوسرے راؤنڈ میں جگہ بنا لی ہے جبکہ دفاعی چمپئن راجر فیڈرر نے بھی کامیاب آغاز کیا ہے تاہم خاتون نمبر ایک کھلاڑی سمونا ہالیپ کو پہلے راؤنڈ میں تھوڑی محنت کرنی پڑ گئی۔جوکووچ نے امریکہ کے ڈونالڈ ینگ کو راست سٹوں میں 6۔1 ،6۔2 ،6۔4 سے شکست دے کر دوسرے راؤنڈ میں جگہ بنائی۔اپنے بازو پر طبی بینڈ پہن کر کھیلنے اترے14 ویں سیڈ جوکووچ نے کھیلتے ہوئے کہنی میں پریشانی کا کوئی اشارہ نہیں دیا اور ایک گھنٹے51 منٹ طویل میچ میں 33 ونرس لگائے ۔گزشتہ سال جولائی میں ومبلڈن کوارٹر فائنل میں شکست کے بعد سے یہ جوکووچ کا پہلا میچ ہے ۔میلبورن میں چھ مرتبہ کے چمپئن جوکووچ اب دوسرے دور میں فرانس کے گائل مونفلس سے کھیلیں گے جنہوں نے کوالیفائر جمی منار کو 6۔3 ،7۔6 ،6۔4 سے شکست دی۔فیڈرر نے اپنے پہلے مرحلے کے مقابلے میں برطانوی کھلاڑی الجاز بٹین کو راست سٹوں میں 6-3 6-4 6-3 سے شکست دی۔کامیابی کیلئے فیڈرر نے صرف 39 منٹس کا وقت لیا۔جاپان کے نمبر ایک کھلاڑی کائی نشیکوری کے اس مرتبہ ٹورنامنٹ سے غیر موجود رہنے پر ان کے ہم وطن یوشھتو نشوکا نے پہلے راؤنڈ میں27 ویں سیڈ فلپ کولشریبر کو 6۔3، 2۔6 ،6۔0 ،6۔1 ،6۔2 سے شکست دے کر دوسرے راؤنڈ میں داخلہ حاصل کر لیا۔اس کے علاوہ جاپان کے ہی ییچي سگتا نے بھی حیران کن طور پر آٹھویں سیڈ امریکہ کے جیک سک کو 6۔1 ،7۔6 ،5۔7 ،6۔3 سے شکست دے کر شاندار کامیابی درج کرلی۔خواتین کے سنگلز میں سرفہرست کھلاڑی ہالیپ نے پہلے دور میں 17 سال کی مقامی کھلاڑی دیستاني اوا کو 7۔6 ،6۔1 سے شکست دے کر دوسرے راؤنڈ میں داخلہ حاصل کیا۔ ہالیپ کو پہلا سیٹ جیتنے میں 73 منٹ لگے۔دوسرے سٹ میں وہ پیر میں پٹی باندھ کر اتریں لیکن آسانی سے دوسرا سٹ جیت لیا۔ اگلے دور میں ومبلڈن فائنلسٹ یوزني بشارڈ کے خلاف کھیلیں گی جنہوں نے اوشن ڈوڈن کو 6۔3، 7۔6 سے شکست دی۔ڈنمارک کی کیرولین وزنیاکي نے مھولا بذارنیسکیو کو 6۔2 ،6۔3 سے شکست دے کر پہلے دور میں جیت درج کی۔ وہیں30 سالہ شاراپووا نے جرمنی کی تتجانا ماریا کو راست سٹوں میں 6۔1 ،6۔4 سے شکست دی۔47 ویں درجہ اور پانچ مرتبہ کی گرانڈ سلام چمپئن شاراپووا کے لئے میدان میں بیٹھے لوگوں نے بھی دل کھول کر حمایت کی۔10 سال پہلے یہاں خطاب جیت چکی روسی کھلاڑی نے پہلے سٹ میں صرف ایک گیم ہی گنوایا اور طویل ریلیاں کھیلتے ہوئے آسان جیت اپنے نام کی۔

TOPPOPULARRECENT