Friday , August 17 2018
Home / سیاسیات / ہتک عزت مقدمہ میں راہول کیخلاف الزامات وضع

ہتک عزت مقدمہ میں راہول کیخلاف الزامات وضع

آر ایس ایس ورکر کی درخواست پر تھانے عدالت کا اقدام ۔ 10 اگسٹ کو آئندہ سماعت

تھانے (مہاراشٹرا ) ۔ 12 جون ۔( سیاست ڈاٹ کام ) صدر کانگریس راہول گاندھی کو اُن کے خلاف راشٹریہ سویم سیوک سنگھ ( آر ایس ایس ) ورکر کے دائر کردہ ہتک عزت مقدمہ میں ٹرائیل کا سامنا کرنا پڑے گا کیونکہ آج یہاں کی ایک مجسٹریٹ کورٹ نے اُن کے خلاف الزامات وضع کردیئے ہیں۔ راہول نے اس کیس میں بے قصور ہونے کادعویٰ کیاہے ۔ 47 سالہ کانگریس لیڈر بھیونڈی میں واقع مجسٹریٹ کی کورٹ کو بھاری سکیورٹی کے درمیان صبح 11:05 بجے پہونچے اور اُن کا لوگوں نے نعروں کے ساتھ استقبال کیا۔ راہول سیول جج اے آئی شیخ کے روبرو حاضر ہوئے جنھوں نے اُن کے خلاف عائد الزامات پڑھ کر سنائے اور شکایت کنندہ راجیش کونتے کا بیان بھی پڑھا ۔ جج نے الزام پڑھکر سناتے ہوئے کہا کہ اس کے مطابق آپ ( راہول گاندھی ) نے 6 مارچ 2014 ء کو بھیونڈی ، تھانے میں انتخابات کیلئے منعقدہ ریالی میں اس آرگنائزیشن کو بدنام کیا جس سے شکایت کنندہ کا تعلق ہے ۔ آپ کی تقریر جو چینلوں پر نشر کی گئی اور جسے اخبارات نے بھی شائع کیا ، اُس سے شکایت کنندے اور اُس کی آرگنائزیشن کی ساکھ کو نقصان پہونچا اور اس طرح آپ نے تعزیرات ہند (آئی پی سی ) کے دفعات 499 اور 500 کے تحت جرم کا ارتکاب کیاہے ۔اس کے بعد جج نے راہول سے پوچھا کہ کیا آپ الزامات قبول کرتے ہیں ؟ اس پر راہول نے جواب دیا ، ’’ مجھے یہ الزام قبول نہیں ‘‘ ۔ تب عدالت نے کانگریس لیڈر کے خلاف آئی پی سی کے دفعات 499 (ہتک عزت) اور 500 (ہتک عزت کے لئے سزاء ) کے تحت الزامات وضع کرنے کا عمل آگے بڑھایا ۔ سیکشن 500 کے تحت اگر کوئی شخص ہتک عزت کامرتکب پایا جائے تو اُسے سادہ قید کی سزاء ہوگی جس کی میعاد دو سال تک بڑھائی جاسکتی ہے ، یا اُسے جرمانہ ہوسکتا ہے یا دونوں سزائیں دی جاسکتی ہیں۔ بعد ازاں عدالت نے اس کیس کو آئندہ سماعت کے لئے 10 اگسٹ پر ڈال دیا ۔ راہول 12:15 بجے عدالت سے روانہ ہوگئے ۔ راہول کے وکلاء نارائن ایئر اور کشال مور نے کہاکہ سماعت کے اگلے روز عدالت ممکن ہے حکمنامہ جاری کرے گی کہ آیا بعض دستاویزات بشمول راہول گاندھی کی تقریر کی ویڈیو ریکارڈنگ کی ٹرانسکرپٹ جو شکایت کنندہ نے داخل کی ہے ، اُن کو ثبوت کے طورپر قبول کیا جاسکتا ہے یا نہیں ۔ راہول کو سماعت کی اگلی تاریخ کو عدالت کے روبرو حاضر ہونے کی ضرورت نہیں ہے ۔

TOPPOPULARRECENT