Monday , January 22 2018
Home / ہندوستان / ہتک عزت کیس میں راہول گاندھی کی عرضی مسترد

ہتک عزت کیس میں راہول گاندھی کی عرضی مسترد

ممبئی ۔ 10 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام) : کانگریس نائب صدر راہول گاندھی کو آج ایک جھٹکہ دیتے ہوئے ممبئی ہائی کورٹ نے آج ان کے خلاف دائر ہتک عزت کیس کو کالعدم قرار دینے کے لیے پیش کردہ ایک عرضی کو مسترد کردیا ہے ۔ جب کہ انہوں نے گاندھی جی کے قتل کے لیے آر ایس ایس کو مورد الزام ٹھہرایا تھا ۔ جسٹس ایم ایل تھلیسانی نے بھیونڈی ضلع تھانے کے ایک مجسٹ

ممبئی ۔ 10 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام) : کانگریس نائب صدر راہول گاندھی کو آج ایک جھٹکہ دیتے ہوئے ممبئی ہائی کورٹ نے آج ان کے خلاف دائر ہتک عزت کیس کو کالعدم قرار دینے کے لیے پیش کردہ ایک عرضی کو مسترد کردیا ہے ۔ جب کہ انہوں نے گاندھی جی کے قتل کے لیے آر ایس ایس کو مورد الزام ٹھہرایا تھا ۔ جسٹس ایم ایل تھلیسانی نے بھیونڈی ضلع تھانے کے ایک مجسٹریٹ کورٹ میں آر ایس ایس کارکن راجیش کنٹے کی جانب سے دائر کردہ ہتک عزت کیس کو کالعدم قرار دینے کے لیے راہول گاندھی کی عرضی کو مسترد کردیا ۔ درخواست گذار نے یہ شکایت کی تھی کہ گذشتہ سال لوک سبھا انتخابات کے دوران ایک ریالی میں کانگریس لیڈر یہ دعویٰ کیا تھا کہ زعفرانی جماعت کے کارکنوں نے مہاتما گاندھی کو قتل کیا تھا ۔ مسٹر راجیش کنٹے جو کہ آر ایس ایس بھیونڈی یونٹ کے سکریٹری ہیں اپنی شکایت میں یہ الزام عائد کیا کہ راہول گاندھی نے گذشتہ سال 6 مارچ کو انتخابی ریالی میں کہا تھا کہ آر ایس ایس کے لوگوں نے گاندھی جی کا قتل کیا ہے ،

جس کے باعث سنگھ کا امیج متاثر ہوا ہے ۔ اس شکایت پر مجسٹریٹ کورٹ نے سماعت کی کارروائی شروع کرتے ہوئے راہول گاندھی کو عدالت میں حاضر ہونے کے لیے نوٹس جاری کی ہے ۔ تاہم کانگریس لیڈر ہائی کورٹ سے رجوع ہو کر عدالت میں حاضری سے استثنیٰ اور شکایت کو خارج کردینے کی گذارش کی ہے ۔ راہول کے وکیل نے استدلال پیش کیا کہ یہ شکایت محرکات اور بدنیتی پر مبنی ہے لہذا کالعدم قرار دینے کی مستحق ہے ۔ جب کہ استغاثہ نے اس عرضی کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ راہول گاندھی کے ریمارکس کے ٹھوس ثبوت موجود ہیں اور وہ مجسٹریٹ کے روبرو اپنے دلائل پیش کرسکتے ہیں ۔ جس پر ہائی کورٹ سے راہول حکم التواء جاری کرنے سے انکار کرتے ہوئے راہول گاندھی کو سپریم کورٹ میں اپیل کرنے کی منظوری دیدی ۔۔

TOPPOPULARRECENT