Friday , November 24 2017
Home / ہندوستان / ہتھیاروں کا ذخیرہ مقدمہ : ابو جندال اور دیگر 6 ملزمین کو سزائے عمر قید

ہتھیاروں کا ذخیرہ مقدمہ : ابو جندال اور دیگر 6 ملزمین کو سزائے عمر قید

ممبئی 2 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) ممبئی 26 نومبر دھماکہ مقدمہ کے کلیدی سازشی لشکر طیبہ کے کارکن سید ذبیح الدین انصاری عرف ابو جندال کے بشمول 7 افراد کو عمر قید کی سزا خصوصی مکوکا عدالت میں سنائی گئی۔ یہ سزا 2006 ء میں اورنگ آباد میں اسلحہ کا ذخیرہ کرنے کے مقدمہ کے سلسلہ میں سنائی گئی ہے۔ سزا سناتے ہوئے عدالت نے کہاکہ تمام 7 مجرم اپنی طبعی موت تک عمر قید کی سزا بھگتیں  گے۔ دیگر دو مجرم محمد مظفر تنویر اور ڈاکٹر محمد شریف کو 14 سال کی سزائے قید ، دیگر 3 مشتاق احمد، جاوید احمد اور افضل خان کو 8 سال کی سزائے قید سنائی گئی۔ عدالت نے تمام 12 مجرموں کی سزا سناتے ہوئے کہاکہ اُسے جرم کی سنگین نوعیت، ندامت کی عدم موجودگی (ملزمین کی جانب سے) اور امکانی اثرات جو اِس مقدمہ سے عوام پر مرتب ہوئے، پیش نظر رکھتے ہوئے سزاؤں کا تعین کرنا پڑا۔ 28 جولائی کو اے ٹی ایس کے اورنگ آباد کے قریب ہتھیاروں کا کثیر مقدار میں ذخیرہ ضبط کرنے کے 10 سال بعد خصوصی عدالت نے 12 افراد کو مجرم قرار دیا اور سزائیں سنائیں جبکہ دیگر 8 کو بری کردیا گیا اور اُن کے خلاف سخت گیر مکوکا الزامات سے دستبرداری اختیار کی گئی۔ مقدمہ کے جملہ 22 ملزم تھے۔ عدالت نے گزشتہ ہفتہ 8 افراد کو بری کردیا تھا۔ 2 ملزمین کے مقدمے علیحدہ طور پر زیردوران ہیں کیوں کہ اُن میں سے ایک اپنے بیان سے سرکاری گواہ بننے کے بعد منحرف ہوگیا تھا اور دوسرا ملزم فرار ہے۔ 8 مئی 2006 ء کو مہاراشٹرا اے ٹی ایس ٹیم نے ایک ٹاٹا سومو اور ایک انڈیکا کار کا چاندواڑ ۔ منماڑ شاہراہ پر جو اورنگ آباد کے قریب ہے، تعاقب کرکے 3 مشتبہ دہشت گردوں کو گرفتار کیا تھا۔ اور اُن کے قبضہ سے 30 کیلو گرام آرڈی ایکس، 10 اے کے اسالٹ رائفلیں، 3200 گولیاں ضبط کی تھیں۔ مبینہ طور پر ابو جندال انڈیکا کار چلا رہا تھا۔ وہ پولیس کو چکمہ دینے میں کامیاب ہوگیا۔ عدالت نے کہاکہ ملزمین جہاد کرنا چاہتے تھے۔

TOPPOPULARRECENT