Tuesday , August 21 2018
Home / ہندوستان / ہجوم کے تشدد کا سلسلہ روکا نہ گیا توہندوستان بکھر جائیگا:ملّی کونسل

ہجوم کے تشدد کا سلسلہ روکا نہ گیا توہندوستان بکھر جائیگا:ملّی کونسل

نئی دہلی24نومبرِ (سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان کے ماحول کو زہر آلود بنانے اور نفرت انگیز فضاء کو فروغ دینے میں آر ایس ایس مکمل طور پر کامیاب ہوچکی ہے ۔گجرات سے شروع ہونے والی نفرت کی فضاء اب پورے ملک میں پھیل چکی ہے اور جب سے مرکز میں بی جے پی اقتدار میں آئی ہے یہ فضاء مسلسل بڑھتی جارہی ہے ،جن ریاستوں میں بی جے پی کی حکومت ہے وہاں کی صورت حال تو بیحدتشویشناک ہوچکی ہے ،ان ریاستوں میں جرائم کے مرتکبین کے خلاف کوئی کاروائی نہیں ہورہی ہے، ان ریاستوں میں اتر پردیش سرفہرست ہے جہاں جرائم کا گراف سب سے زیادہ ہو چکا ہے ،عام مقامات سے لیکر ٹرینوں میں بھی مذہب ، مسلمان اوردلت ہونے کی بناپرمسافروں پر حملہ کیا جارہاہے۔ ان خیالات کا اظہار آل انڈیا ملی کونسل کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر منظورعالم آج ایک پریس نوٹ میں کیاہے ۔انہوں نے اپنے بیان میں کہاکہ کل یوپی کے باغپت میں جس طرح سے ٹرین میں تین افراد کو ان کے مسلمان ہونے کی بنیاد پر ماراگیا وہ بتاتاہے انتظامیہ نے مجرموں کو کھلی چھوٹ دے رکھی ہے ،ٹرین میں گلزار احمد ،محمد اسرار اور ابوبکر کو زدوکوب کوئی پہلا واقعہ نہیں ہے بلکہ اس سے پہلے بھی ٹرینوں میں ہجوم کے تشدد اور حملہ کے متعدد واقعات پیش آچکے ہیں۔اسی سال جون میں دہلی سے پلول جارہے جنید خان پر ہجوم نے ٹرین میں حملہ کرکے شہید کردیا تھا ،ان کے بھائیوں کی بھی بے دردی سے پٹائی کی تھی ،انہی دنوں بجنور میں چلتی ٹرین میں ایک پولیس ملازم نے ایک روزہ دار مسلمان خاتون کی عصمت دری کی تھی ،جولائی میں مین پوری میں خواتین اور بچہ سمیت دس افراد پر مشتمل ایک فیملی کو چلتی پاسنجر ٹرین میں زدوکوب کیا گیا تھا ، ہجوم نے ان پر حملہ کیا اور پوری فیملی کو نشانہ بنایا،اسی پاسنجر ٹرین میں ایک اورواقعہ ابھی اکتوبر میں پیش آیاہے جہاں تین افراد پر مشتمل ایک فیملی پر شدت پسند گروپ کی جانب سے شدید حملہ کیا گیا تھا۔ رواں سال یہ چند حملے اتر پردیش اور ہریانہ کے روٹ پر چلنے والی ٹرینوں میں پیش آئے ہیں ،دیگر مقامات پر ہونے والے حملے ہجوم کے تشدد گاؤکشی کے نام پر قتل کی وارادت کی فہرست اس سے کہیں زیادہ ہیں اور یہ سلسلہ مسلسل بڑھتاجارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT