Tuesday , September 25 2018
Home / ہندوستان / ہریانہ میں بی جے پی کے ’’مشن 60 پلس‘‘ کا آغاز

ہریانہ میں بی جے پی کے ’’مشن 60 پلس‘‘ کا آغاز

چندی گڑھ ۔ 9 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کو اب یہ توقعات پیدا ہوگئی ہیکہ وہ ہریانہ میں واضح اکثریت کے ساتھ حکومت تشکیل دے گی۔ لہٰذا اس نکتہ کو پیش نظر رکھتے ہوئے اس نے انتخابی ریالی کو ’’مشن 60 پلس‘‘ سے موسوم کرتے ہوئے اپنے اعلیٰ سطحی قائدین کو انتخابی مہم کا حصہ بنایا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی اپنے تین دوروں کے دوران 8 عوامی جلسوں

چندی گڑھ ۔ 9 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کو اب یہ توقعات پیدا ہوگئی ہیکہ وہ ہریانہ میں واضح اکثریت کے ساتھ حکومت تشکیل دے گی۔ لہٰذا اس نکتہ کو پیش نظر رکھتے ہوئے اس نے انتخابی ریالی کو ’’مشن 60 پلس‘‘ سے موسوم کرتے ہوئے اپنے اعلیٰ سطحی قائدین کو انتخابی مہم کا حصہ بنایا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی اپنے تین دوروں کے دوران 8 عوامی جلسوں سے خطاب کرچکے ہیں، جہاں انہوں نے کانگریس کے اقتدار والی ریاست کے بیشتر علاقوں کا احاطہ کیا ہے۔ اسی طرح بی جے پی کے دیگر اعلیٰ سطحی قائدین بھی مختلف مہمات میں مصروف ہیں۔ فی الحال جو قائدین ریاست کا دورہ کررہے ہیں ان میں صدر بی جے پی امیت شاہ، مرکزی وزراء راج ناتھ سنگھ، سشماسوراج، نتن گڈکری، سمرتی ایرانی، پیوش گوئل، راؤ اندرجیت سنگھ، بی جے پی کی اقتدار والی کچھ ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ بشمول شیوراج سنگھ چوہان کے علاوہ نوجوت سنگھ سدھو کے نام قابل ذکر ہیں۔ یاد رہے کہ ایک زمانہ تھا جب ریاست میں بی جے پی کو دوسرے درجہ کی پارٹی کا موقف حاصل تھا جو انڈین نیشنل لوک دل اور اس وقت کی بنسی لال کی قیادت میں ہریانہ وکاس پارٹی کے ساتھ بی جے پی دوسرے درجہ کی پارٹی سمجھی جاتی تھی۔ ایسا پہلی بار ہورہا ہیکہ بی جے پی خود اپنے بل بوتے پر تمام 90 نشستوں پر مقابلہ کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT