Sunday , November 19 2017
Home / ہندوستان / ہریانہ میں ریلوے کو 55,92 کروڑ کا نقصان

ہریانہ میں ریلوے کو 55,92 کروڑ کا نقصان

جاٹ برادری کے پرتشدد احتجاج پر وزیر ریلوے کا بیان
نئی دہلی ۔ 9 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام) : ہریانہ میں حالیہ جاٹ برادری کی احتجاجی تحریک کے دوران ریلوے املاک پر حملے اور 2,314 ٹرینوں کی منسوخی سے تقریبا 55,92 کروڑ کا نقصان ہوا ہے ۔ وزیر ریلوے سریش پربھو نے آج لوک سبھا میں بتایا ۔ حالیہ جاٹ ایجی ٹیشن کے دوران ٹکٹوں کی منسوخی اور املاک پر حملوں سے ریلویز کو 55,92 کروڑ کے نقصانات برداشت کرنے پڑے ۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر ریلوے نے کہا کہ 12-24 فروری کے دوران احتجاجی تحریک میں شدت کے باعث 2,134 ٹرینس بشمول 1,033 میل اور ایکسپریس اور 1,101 پاسنجر ٹرینس کو مکمل منسوخ اور 259 میل / ایکسپریس ٹرینوں کو جزوی طور پر موڑ دیا گیا ۔ علاوہ ازیں 430 ٹرینوں بشمول 229 میل اور ایکسپریس اور 201 پاسنجر ٹرینوں کو جزوی طور پر منسوخ کردیا گیا ۔ مسٹر سریش پربھو نے بتایا کہ ریلویز میں پولیس کی نگرانی ریاستی حکومت کا معاملہ ہے جب کہ ریلوے اسٹیشن اور چلتی ہوئی ٹرینوں میں انسداد جرائم ، کیسوں کا اندراج اور تحقیقات ریاستی پولیس کے تعاون سے گورنمنٹ ریلوے پولیس انجام دیتی ہے تاہم ریلوے پروٹکشن فورس کو متاثرہ علاقوں اور حساس ریلوے اسٹیشنوں میں اہم ٹرینوں کی حفاظت کے لیے متعین کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے املاک کی حفاظت کے لیے ریلوے پروٹکشن فورس کی جانب سے کوئی لاپرواہی نہیں کی گئی اور ریلوے کے پاس ایسا کوئی میکانزم نہیں ہے کہ پرتشدد واقعات میں نقصان زدہ املاک کے لیے زرتلافی وصولی کی جائے ۔

TOPPOPULARRECENT