Friday , July 20 2018
Home / Top Stories / ہریانہ میں کشمیر کے 2طلباء کو زدوکوب، 3 ملزمان سلاخوں کے پیچھے

ہریانہ میں کشمیر کے 2طلباء کو زدوکوب، 3 ملزمان سلاخوں کے پیچھے

سری نگر3فروری (سیاست ڈاٹ کام ) ریاست ہریانہ میں جموں وکشمیر کے ضلع راجوری سے تعلق رکھنے والے دو طالب علموں کو زدوکوب کرنے کے معاملے میں تین ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ واقعہ کی نسبت پولیس تھانہ مہندر گڑھ میں معاملہ بھی درج ہوچکا ہے ۔ واضح رہے کہ سینٹرل یونیورسٹی ہریانہ کے دو طالب علموں آفتاب احمد اور امجد علی ساکنان ضلع راجوری کو جمعہ کے روز شرپسندوں کے ایک گروپ نے بلا کسی وجہ شدید زدوکوب کیا۔زدوکوب کا نشانہ بنائے گئے ایک طالب علم کا کہنا ہے ‘جمعہ کو ہم نماز کی ادائیگی کے لئے مہندر گڑھ مارکیٹ گئے ۔ جب ہم نے ایک چوک میں اپنا موٹر سائیکل کھڑا کیا تو قریب 15 سے 20 افراد نے ہمیں بلا کسی وجہ پیٹنا شروع کردیا’۔ آفتاب اور امجد سینٹرل یونیورسٹی ہریانہ سے جغرافیہ میں پوسٹ گریجویشن کررہے ہیں۔ انہوں نے نامہ نگاروں کو بتایا ‘ہم یونیورسٹی سے مہندر گڑھ کے لئے نکلے تھے ۔ وہاں ہم نے نماز ادا کی۔ اور بھی کچھ کام تھے جو ہم نے نپٹائے ۔ وہ لوگ شاہد ہمارا پہلے سے پیچھا کررہے تھے لیکن ہمیں اس کا شک نہیں ہوا۔ وہاں ایک چوک میں جب ہم نے اپنی بائیک کھڑی کی تو لڑکوں کا ایک گروپ آیا اور ہمیں مارنا شروع کردیا۔ ان کی تعداد 15 سے 20 تھی۔ میں نے ان سے پوچھا کہ آپ ہمیں کیوں مار رہے ہو، لیکن انہوں نے اس کا کوئی جواب نہیں دیا۔ وہ ہم نے کئی منٹوں تک مسلسل مارتے رہے ۔ وہاں موجود لوگوں نے بھی ہمیں نہیں بچایا’۔جموں وکشمیر کی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے واقعہ پر اپنی شدید ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا ‘مہندر گڑھ ہریانہ میں دو کشمیری طالب علموں کو پیٹنے کی خبروں نے مجھے حیران و پریشان کردیا ہے ۔ میں متعلقہ انتظامیہ پر زور دیتی ہوں کہ وہ معاملے کی تحقیقات کرے ۔

TOPPOPULARRECENT