Monday , July 16 2018
Home / ہندوستان / ہریتا ہرم پروگرام پر پرانے شہر سے رپورٹ کی عدم تیاری

ہریتا ہرم پروگرام پر پرانے شہر سے رپورٹ کی عدم تیاری

شجرکاری پر شعور بیداری کا منصوبہ اکارت ثابت ، بلدیہ سے منصوبہ پر عمل آوری مسدود
حیدرآباد۔16مئی(سیاست نیوز) حکومت نے ریاست بھر میں درخت اور پودے لگانے کیلئے ’’ہریتا ہرم‘‘ کے نام سے جامع منصوبہ کا اعلان کرتے ہوئے کروڑوں کی تعداد میں پودے لگائے جانے کی رپورٹ پیش کی ہے لیکن پرانے شہر میں کی گئی شجرکاری کے سلسلہ میں تاحال کوئی رپورٹ تیار نہیں کی گئی اور نہ ہی مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے کوئی رپورٹ پیش کی گئی ہے ۔ حکومت تلنگانہ کے ہریتا ہرم پروگرام کے دوران جی ایچ ایم سی نے اعلان کیا تھا کہ بلدی حدود میں جملہ 40 لاکھ پودے لگائے جائیں گے اور ایک سال کی مدت کے دوران یہ شجرکاری مکمل کی جائے گی لیکن اس پروگرام کے سلسلہ میں بھی پرانے شہر کو پوری طر ح سے نظر انداز کیا جانے لگا ہے ۔ بتایاجاتا ہے کہ ریاست تلنگانہ میں چلائے جا رہے اس طویل مدتی منصوبہ میں حکومت کی جانب سے شجرکاری مہم میں تقسیم کئے جانے والے 80 فیصد سے زائد پودوں کو پھینک دیا گیا ہے ۔ جی ایچ ایم سی کی جانب سے جو اعلان کیا گیا ہے کہ بلدی حدود میں 40لاکھ پودے لگائے جائیں گے اور اس کیلئے عوام میں شعور بیداری لائی جائے گی لیکن اس پر کوئی عمل پرانے شہر میں ہوتا نظر نہیں آرہا ہے اور نہ ہی کوئی شجرکاری مہم کا باضابطہ انعقاد عمل میں لایاجا رہا ہے جس کے ذریعہ عوام کو شجرکاری کی سمت راغب کروایاجاسکے۔ بلدی عہدیداروں کے مطابق شجرکاری کے سلسلہ میں اقدامات کئے جا رہے ہیں اور ہریتا ہرم پروگرام کے دوران مہم میں شدت بھی پیدا کی جا رہی ہے لیکن شجرکاری کے بعد پودوں کو محفوظ رکھنے کیلئے اقدامات نہ کئے جانے کے سبب پودوں کو فروغ حاصل نہیں ہو رہا ہے ۔ذرائع کے مطابق شہر میں جی ایچ ایم سی نے پودوں کو تحفظ حاصل نہ ہونے کے سبب ہی یہ فیصلہ کیا ہے کہ شجرکاری کو فی الحال بند کیا جائے۔ جی ایچ ایم سی اگر شہریوں کو ان کے گھروں میں شجرکاری کیلئے پودوں کی مفت سربراہی کرتی ہے اور اس میں محکمہ باغبانی سے تعاون حاصل کرتے ہوئے خوبصورت پودے تقسیم کئے جاتے ہیں توایسے میں شہری بھی ان پودوں کو لگانے میں دلچسپی دکھائیں گے لیکن جو پودے تقسیم کئے جا رہے ہیں ان پودوں میں معمولی اقسام کے پودے ہونے کے سبب شہریوں میں بھی ان پودوں کے حصول کے سلسلہ میں دلچسپی نہیں ہے۔ محکمہ باغبانی کے عہدیداروں اور جی ایچ ایم سی عہدیداروں میں بہتر تال میل کے ذریعہ پرانے شہر کی بڑی سڑکوں کے کنارے شجرکاری کو یقینی بنایا جاسکتا ہے جو عوام میں شعور اجاگر کرنے کا سبب ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT