Thursday , September 20 2018
Home / سیاسیات / ہر شخص ہندو پیدا ہوتا ہے: سوامی سرسوتی

ہر شخص ہندو پیدا ہوتا ہے: سوامی سرسوتی

مغلوں اور انگریزوں کے دور میں ہندوؤں کی مذہبی تبدیلی کی منطق

مغلوں اور انگریزوں کے دور میں ہندوؤں کی مذہبی تبدیلی کی منطق
احمدآباد ۔ 5 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) دوارکا شکتی پیتھ کے مہنت سوامی سدانند سرسوتی نے دعویٰ کیا ہیکہ کرہ ارض پر ہر شخص پہلے بحیثیت ہندو پیدا ہوتا ہے اور کہا کہ ہندوستان کی اکثریتی برادری ہی مذہبی تبدیلی سے بری طرح متاثر ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ’’ہر انسان سناتنی یا ہندو ہوتا ہے۔ ہر بچہ بحیثیت ہندو جنم لیتا ہے۔ دنیا اس کو دیگر مذاہب دیتی ہے۔ ہماری ویدوں میں اس بات کا ثبوت ہے کہ ہر شخص پہلے ہندو ہوتا ہے اور پھر دوسرے مذاہب میں شامل کروایا جاتا ہے‘‘۔ سرسوتی نے اس جلسہ میں مزید کہاکہ ’’ہم ہندو ہی مذہبی تبدیلی سے سب سے زیادہ اور بری طرح متاثر ہوئے ہیں جبکہ دوسروں کو اس (مذہبی تبدیلی) سے فائدہ ہی پہنچا ہے۔ اس جلسہ میں آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت، گجرات کے وزراء سوربھ پٹیل، پردیپ سنہہ جڈیجہ کے علاوہ آر ایس ایس کے 15,425 کارکنوں نے شرکت کی۔ سوامی سرسوتی نے کہا کہ اگر ہندوستان میں ہندو نہ ہوتے تو اس ملک کے اتحاد، یکجہتی اور ہمہ تہذیبی معاشرہ کو بچایا نہیں جاسکتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ایک گہری سازش کے تحت غریب قبائلیوں کو عیسائی بنایا جارہا ہے اور انہیں تبدیلی مذہب کیلئے ترغیب دی جارہی ہے۔ اگر یہی ہوتا رہا تو آئندہ 50 سال بعد ہمارے نوجوان کہاں جائیں گے۔ سرسوتی نے کہا کہ مغلوں سے لیکر برطانوی سامراجیوں کیدور تک ان کی طرف سے ہر وقت ہم (ہندوؤں) پر حملہ کیا جاتا رہا لیکن مذہبی تبدیلی کا آج اگر ایک چھوٹا سا واقعہ بھی منظرعام پر آتا ہے تو دنیا بھر کے 156 ملکوں نے خوب شور مچایا۔ انہوں نے کہا کہ کئی سال تک ہندوؤں کو مسلم یا عیسائی بنایا گیا جس طرح شیواجی نے نوابوں کے آگے گھٹنے نہیں ٹیکے تھے ہمیں بھی اس موضوع پر اپنی تمام تر طاقت استعمال کرنی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT