Sunday , September 23 2018
Home / Top Stories / ہر وزارت اور محکمے میں آر ایس ایس کے کارکن موجود

ہر وزارت اور محکمے میں آر ایس ایس کے کارکن موجود

کشمیر کی ابترصورتحال کا مرکز ذمہ دار ، جی ایس ٹی میں اصلاحات کا تیقن : راہول گاندھی
کلبرگی 13 فروری (سیاست ڈاٹ کام) صدر کانگریس راہول گاندھی نے آج آر ایس ایس پر الزام عائد کیا کہ وہ ہر عمارت پر قابض ہونا چاہتی ہے اور اس نے اپنے آدمی ہر وزارت اور ہر ادارہ میں شامل کردیئے ہیں۔ این ڈی اے کے وزراء آزادانہ طور پر کام نہیں کررہے ہیں کیونکہ سنگھ پریوار کی تنظیم کے آدمی ہر وزارت، ہر ادارے اور ہر محکمہ میں موجود ہیں۔ دریں اثناء نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب کانگریس نے آج این ڈی اے حکومت کو جموں و کشمیر کی صورتحال کے ابتر ہونے کا ذمہ دار قرار دیا اور کہاکہ مرکزی حکومت نے ریاست جموں و کشمیر کے بارے میں گھل مل یقین پالیسی اختیار کر رکھی ہے۔ پاکستان کے بارے میں درحقیقت اس کی کوئی پالیسی موجود ہی نہیں ہے۔ وہ سرحد پار کی تائید اور سرپرستی سے دہشت گرد کارروائیاں کرنے والوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کرسکتی۔ اگر کانگریس راہول گاندھی نے وزیراعظم اور بی جے پی ۔ پی ڈی پی مخلوط ریاستی حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ نریندر مودی اور محبوبہ مفتی کے درمیان اختلافات موجود ہیں جس کے نتیجہ میں ہمارے فوجی اپنی جانیں دے رہے ہیں۔ انہوں نے اس اتحاد کو ایک ناپاک اتحاد قرار دیا۔ قبل ازیں کانگریس کے صدر راہول گاندھی نے آج کہاکہ اگر ان کی پارٹی مرکز میں اقتدار کے لئے منتخب کی جاتی ہے تو وہ موجودہ جی ایس ٹی میں اصلاحات کرتے ہوئے اس کو آسان بنائے گی۔ نیز اس کو سنگل سلاب ٹیکس بنانے کی کوشش کے ساتھ موزوں سطح پر لایا جائے گا۔ راہول گاندھی نے جو اس ٹیکس کے نفاذ کے طریقہ کار کے کٹر ناقد رہے ہیں، اس (جی ایس ٹی) کو ’’گبر سنگھ ٹیکس‘‘ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ اس کے بارے میں پیدا شدہ شدید اُلجھن کو دور کیا جانا چاہئے۔ راہول گاندھی نے یہاں نئے صنعت کاروں اور پیشہ ورانہ ماہرین سے بات چیت کے دوران کہاکہ ’’ہمارا موقف بالکل واضح ہے۔ ہم جب اقتدار پر آئیں گے۔ موجودہ جی ایس ٹی میں اصلاحات کی جائیں گی اور اس کو آسان بنایا جائے گا۔ ہم اس کو واحد ٹیکس بنانے کی کوشش کریں گے اور اس کی موزوں و مناسب سطح مقرر کریں گے۔ ہم اس میں موجود اُس شدید اُلجھن کو دور کرنے کی کوشش کریں گے، جس اُلجھن کا آپ سامنا کررہے ہیں‘‘۔ راہول گاندھی نے کہاکہ پارلیمنٹ میں کانگریس اس مسئلہ پر بی جے پی اور این ڈی اے سے مسلسل مقابلہ کررہی ہے۔ انھوں نے کہاکہ کانگریس ان (بی جے پی ۔ این ڈی اے) سے کہہ رہی ہے کہ پانچ زمروں پر مشتمل جی ایس ٹی نافذ نہ کیا جائے بلکہ اس ٹیکس نظام پر عمل آوری سے قبل ایک پائیلٹ پراجکٹ پر تجربہ کیا جائے۔ بصورت دیگر یہ ٹیکس تباہ کن المیہ ثابت ہوگا۔ کانگریس کے صدر نے کہاکہ جی ایس ٹی کی منظوری سے قبل سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے وزیر فینانس ارون جیٹلی سے اس پیغام کے ساتھ ملاقات کی تھی کہ جی ایس ٹی پر عمل آوری سے قبل پائیلٹ پراجکٹس پر تجربہ کیا جائے کیوں کہ ان کی پارٹی (کانگریس) پانچ زمروں پر مشتمل جی ایس ٹی سے متفق نہیں ہے۔ راہول گاندھی نے اس پروگرام کے ساتھ ہی کرناٹک کے شمالی علاقوں میں جاری چار روزہ دورہ مکمل کیا جو دراصل رواں سال کے دوران اس ریاست میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کی مہم کا ایک حصہ تھا۔

TOPPOPULARRECENT