Wednesday , September 26 2018
Home / Top Stories / ’’ہماری بھول ۔ کنول کا پھول ‘‘ شادی کے رقعہ پرتحریر

’’ہماری بھول ۔ کنول کا پھول ‘‘ شادی کے رقعہ پرتحریر

مدھیہ پردیش میں شادی میں مشکلات پر ناراض جوڑے کا حکومت پر طنز

بھوپال ۔ 15 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) مدھیہ پردیش کے ضلع ساگرکا ایک خاندان ریاستی حکومت سے اتنا خفا ہیکہ شادی کے رقعہ میں چھپوایا گیا ہے ’’ہماری بھول ۔ کنول کا پھول‘‘۔ یہ گجرات کے ایک تاجر طبقہ کا شادی کا رقعہ ہے جس میں ایک تاجر نے اس رقعہ پر بی جے پی کے خلاف اپنی ناراضگی ظاہر کی ہے۔ 6 فبروری کو راجندر کی شادی کی تاجر کی بیٹی راگنی کے ساتھ مقرر ہے۔ شادی کیلئے اسے اپنا کھیت رہن رکھنا پڑا۔ 2010ء میں ریاستی محکمہ صحت نے ایک خصوصی عہدیدار مقرر کیا تھا اس کے ساتھ غریب تقریباً 473 ارکان عملہ تھے۔ اس محکمہ کو برخاست کردیا گیا ہے جس کی وجہ سے تاجر برادری کی اس لڑکی کی شادی کیلئے حکومت سے بروقت قرض نہیں مل سکا۔ لڑکی کے والد نے حکومت پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہم نے زندگی میں ایک ہی غلطی کی کہ بی جے پی کو ووٹ دیا‘‘۔ شادی کے رقعہ پر اس نے چھپوایا ہیکہ مستقبل میں بچوں کے اسکول کے یونیفارم پر، اس کے بعد گھر کے باہر بیانرس لگوانے پر دینے کیلئے ہمارے پاس پیسے نہیں ہے کیونکہ نوکری ختم کی جاچکی ہے۔ مدھیہ پہردیش کے طلبہ کا یونیفارم کا خرچ ہے۔ طلبہ سے دوپہر کے کھانے کی رکابیاں صاف کروائی جاتی ہیں۔ شادی کا رقعہ اخبارات کی سرخیوں میں آچکا ہے۔ کانگریس نے اس سلسلہ میں بی جے پی پر تنقید کی ہے۔ کانگریس کارکنوں کے مشیروں نے کہا کہ ہمیں شبہ ہیکہ ابھی لوگوں کے دلوں میں جو چنگاری سلگ رہی ہے، کہیں وہ ایک دن آتش فشاں نہ بن جائے۔ سماج کا ہر شعبہ پریشان ہے۔ حکومت کو آئندہ انتخابات میں عوام کے سامنے جانا مشکل ہوجائے گا جبکہ بی جے پی کے ایک نمائندہ راہول کوٹھاری نے کہا کہ کیا سابق حکومت میں کبھی اوور ڈرافٹ لینے کی نوبت نہیں آئی۔ کانگریس کارکن کام نہیں کرتے۔ انہیں کوئی ضمیر نہیں ہے۔ اسی لئے انہیں مشکلات کا سامنا ہوتا ہے۔ اگر شادی میں رکاوٹیں تھیں تو کلکٹر کو اطلاع دی جاتی۔ وہ چیف منسٹر کو اطلاع دیتے اور چیف منسٹر شادی کروادیتے۔ ویڈیو گرافی بھی ہوتی۔

TOPPOPULARRECENT