Saturday , October 20 2018
Home / دنیا / ہم افغانستان کو غیرمستحکم نہ کرنے والے پاکستان کے خواہاں : امریکہ

ہم افغانستان کو غیرمستحکم نہ کرنے والے پاکستان کے خواہاں : امریکہ

وشنگٹن ،19دسمبر (سیاست ڈاٹ کام)پاکستان اور امریکہ کی کشیدگی کے درمیان امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے وضع کی جانے والی قومی سلامتی کی نئی حکمت عملی میں ایک بار پھر پاکستان سے بہتر تعلقات کو قائم رکھنے کیلئے ’ڈو مور‘ (مزید کچھ کر دکھاؤ) کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ وائٹ ہاؤس کی جانب سے جاری ہونے والی قومی سلامتی کی نئی حکمت عملی کی دستاویز 68 صفحات پر مشتمل ہے ۔بی بی سی کے مطابق نئی حکمت عملی میں جنوبی ایشیا کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا گیا ہیکہ ’ہم پاکستان پر اس کی دہشت گردی کے خاتمے کیلئے جاری کوششوں میں تیزی لانے کیلئے دباؤ ڈالینگے ، کیونکہ کسی بھی ملک کی شدت پسند اور دہشت گردوں کیلئے حمایت کے بعد کوئی بھی شراکت باقی نہیں رہ سکتی ہے ‘۔امریکہ کی جانب سے کہا گیا ہیکہ ہم ایک مستحکم اور خود مختار افغانستان چاہتے ہیں اور ایک ایسا پاکستان جو اسے غیرمستحکم کرنے میں ملوث نہ ہو۔امریکہ چاہتا ہیکہ پاکستان مسلسل اس بات کا ثبوت دیتا رہیکہ وہ اپنے نیوکلیئر اثاثوں کا محافظ ہے ۔نئی امریکی قومی سلامتی حکمت عملی میں پاکستان کے حوالہ سے مزید کہا گیا ہیکہ ’جیسے جیسے پاکستان میں سکیورٹی صورتحال بہتر ہوتی جائیگی اور پاکستان یہ یقین دلاتا رہیگا کہ وہ دہشت گردی کے خاتمے کیلئے امریکہ کی مدد کرتا رہیگا تو ہم اس کیساتھ تجارت اور سرمایہ کاری کے تعلقات بڑھائیں گے‘ ۔امریکہ نے مزید کہا ہیکہ پاکستان کے اندر سے کام کرنے والے شدت پسندوں اور دہشت گردوں سے امریکہ کو مسلسل خطرات لاحق ہیں۔دوسری جانب امریکہ کی جانب سے قومی سلامتی کے حوالے سے جاری ہونے والی نئی حکمت عملی میں کہا گیا ہیکہ’امریکہ ہندوستان کیساتھ اپنی اسٹریٹیجک شراکت داری کو مزید مضبوط کریگا اور سرحدی علاقوں اور بحر ہندکی سکیورٹی میں اسکے قائدانہ کردار کی حمایت کریگا‘۔ ہندوستان کے بارے میں مزید کہا گیا ہیکہ ہم خطے میں ہندوستان کی مالی معاونت بڑھانے میں اس کی حمایت کرینگے ۔افغانستان کے حوالہ سے اس حکمت عملی میں کہا گیا ہیکہ امریکہ خطے میں امن اور سکیورٹی کیلئے افغانستان کا پارٹنر رہے گا۔

TOPPOPULARRECENT