Thursday , December 14 2017
Home / ہندوستان / ہندنژاد برطانوی خاتون پر گاؤ اسمگلروں کی فائرنگ

ہندنژاد برطانوی خاتون پر گاؤ اسمگلروں کی فائرنگ

۔2:30 بجے شب سہیلی کے ساتھ لکژری کار میں سیر کرنے والی خاتون کی پولیس میں شکایت

گرگاؤں ۔ 27 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) پولیس نے کہا ہیکہ گرگاؤں ۔ الور روڈ پر ایک تیز رفتار گاڑی میں بھرے ہوئے مویشیوں کو آزاد کروانے کی کوششوں میں ملوث دو خواتین جن میں ایک برطانوی شہری بھی شامل تھی، مویشیوں کے اسمگلروں کے ایک گروپ نے مبینہ طور پر فائرنگ کی۔ پولیس کے ایک عہدیدار نے کہا کہ یہ واقعہ منگل اور چہارشنبہ کی درمیانی شب 2:30 بجے پیش آیا۔ جب ایک برطانوی شہری سونیا شرما اور اس کی سہیلی آرچی بران وال اپنی نئی اسپورٹس یوٹیلٹی وہیکل (ایس یو وی) چلارہی تھیں کہ راستہ میں ایک تیز رفتار ٹیمپو نظر آئی جس میں پانچ تا چھ گائے موجود تھیں۔ اس ٹیمپو کے پچھلے ٹائر نہیں تھے اور وہ صرف ریم پر چل رہی تھی۔ سونیا شرما نے پی ٹی آئی سے کہا کہ ’’ہم نے دیکھا کہ چند بچے ٹیمپو کے چھت پر بیٹھے تھے۔ گائے کی ’’غیرقانونی‘‘ منتقلی کو روکنے کیلئے ہم نے اس گاڑی کا پیچھا کیا لیکن ڈرائیور کی نشست کے ساتھ بیٹھے ہوئے ایک شخص نے ہم سے گالی گلوج کی‘‘۔ مویشیوں کی حالت دیکھ کر ان دونوں خواتین نے پولیس کو طلب کیا اور ڈرائیور سے گاڑی روکنے کیلئے کہا۔ تاہم گڑبڑ محسوس کرتے ہوئے بعض افراد نے فائرنگ شروع کردی۔ سونیا شرما نے کہا کہ ’’مویشیوں کی ایذاء رسانی کی شکایت کے ساتھ ہم نے فوری طور پر پولیس طلب کیا۔ ہم نے (ٹیمپو میں سوار) تین افراد کو رکنے کیلئے اشارہ کیا لیکن انہوں نے فائرنگ شروع کرتے ہوئے ہمیں خوف و پریشانی میں مبتلاء کردیا۔ انہوں نے ایک گولی ہم پر بھی چلائی لیکن خوش قسمتی سے نشانہ چوک گیا اور ہمیں گولی نہیں لگی‘‘۔ اس کے باوجود دونوں عورتیں اٹل رہیں اور انہوں نے ٹیمپو کا پیچھا جاری رکھا۔ پولیس 2:45 بجے پہنچی اور اس میں سوار افراد گاڑی چھوڑ کر فرار ہوچکے تھے۔ گرگاؤں کے پولیس پی آر او رویندر کمار نے کہا کہ ان دو عورتوں کی شکایت پر سوہنا پولیس اسٹیشن میں مویشیوں کے چار تا پانچ نامعلوم اسمگلروں کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ تاہم ہنوز کسی کو گرفتار نہیں کیا گیا۔ سونیا شرما نے کہا کہ وہ اس واقعہ کے بعد پیدا شدہ خوف سے باہر نہیں نکل پائی۔ رات کے اوقات پولیس پٹرولنگ یا نگرانی کا ذرہ برابر بھی شائبہ نہیں تھا اور وہ اس ملک کو چھوڑ دینا چاہتی ہے۔ آدھی رات کے بعد منچلے مردوں کی طرح سڑکوں پر سیر سپاٹے کرنے والے عورت نے اس صورتحال پر مایوسی کا اظہار کیا ہے۔ سونیا شرما نے کہا کہ ’’میرا تاثر تھا کہ میں ایک آزاد ملک میں رہتی ہوں اور بلاخوف و خطر کہیں بھی جاسکتی ہوں لیکن جو کچھ ہوا ہے اس سے اب میں مایوس ہوچکی ہوں۔ اب صرف اس ملک کو چھوڑ کر باہر چلی جانا چاہتی ہوں‘‘۔ برطانوی شہریت رکھنے والی سونیا شرما نے کہا کہ اس واقعہ نے ملک کے انتظامیہ اور قانونی نظام پر میرے یقین اور بھروسہ کو بالکلیہ طور پر دہلا دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT