Wednesday , December 12 2018

ہندوستانی سفارتکار کی فائربندی خلاف ورزیوں پر طلبی

دہلی سے دھمکی آمیز کال پر بھی وضاحت طلب کی گئی،تحقیقات کا مطالبہ
اسلام آباد ، 26 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے آج ہندوستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کیا اور سرحد کے پاس ہندوستانی دستوں کی جانب سے فائر بندی کی مبینہ خلاف ورزیوں پر احتجاج درج کرایا جبکہ یہاں حکام کا دعویٰ ہیکہ تین عام شہری ہلاک ہوئے ہیں ۔ پاکستان کے دفترخارجہ کے بیان میں کہا گیا ہیکہ ہندوستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کو یہاں وزارت امورخارجہ کو ڈائرکٹر جنرل جنوبی ایشیاء اور سارک محمد فیصل نے طلب کیا تاکہ ہندوستان کی جانب سے سیزفائر کی خلاف ورزیوں پر احتجاج درج کرایا جاسکے۔ یہ مبینہ خلاف ورزیاں 23، 24 اور 25 اکٹوبر کی راتوں میں پیش آئیں اور شکرگڑھ اور ظفروال سیکٹرس کو نشانہ بنایا گیا۔ قبل ازیں ہندوستان سے گورنر ہاؤس کراچی کو موصول ہونے والی دھمکی آمیز ٹیلی فون کال کی تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا۔ ترجمان دفتر خارجہ قاضی خلیل اللہ کے مطابق ہندوستانی ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کو دفتر خارجہ طلب کرکے 23 اکتوبر کو گورنر ہاؤس کراچی کو نئی دہلی سے موصولہ دھمکی آمیز ٹیلی فون کال سے آگاہ کیا گیا۔ ہندوستانی ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلبی کے دوران دھمکی آمیز ٹیلی فون کال کی تفصیلات بھی فراہم کی گئیں۔ ہندوستانی ڈپٹی ہائی کمشنر سے مطالبہ کیا گیا کہ ہندوستان اس دھمکی آمیز ٹیلی فون کال کی باضابطہ تحقیقات کرے اور اس کے نتائج سے پاکستان کو آگاہ کیا جائے۔ واضح رہے کہ 23 اکتوبر 2015 کو گورنر ہاؤس کراچی کو ہندوستان کے دارالحکومت نئی دہلی سے دھمکی آمیز ٹیلی فون کال موصول ہوئی تھی۔ دھمکی آمیز فول کال میں گورنر ہاؤس کو بم سے اڑانے کی دھمکی دی گئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT