Thursday , January 24 2019

ہندوستانی طلبہ کے امریکہ میں قیام کو ٹرمپ کی تائید

واشنگٹن 15 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی طلبہ جو امریکی تعلیمی اداروں میں زیرتعلیم ہیں اُنھیں ملک سے خارج نہیں کیا جانا چاہئے کیوں کہ ملک کو اُن جیسے اسمارٹ افراد کی ضرورت ہے۔ ریپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ نے کہاکہ وہ چاہتے ہیں کہ تارکین وطن پالیسیوں کے بارے میں وضاحت کردیں۔ اُنھوں نے کہاکہ چاہے وہ اُسے پسند کرتے ہوں یا نہ کرتے ہوں، اُن کی تنخواہ وغیرہ وغیرہ لیکن کثیر تعداد میں لوگوں کو تعلیم دیں گے جو انتہائی اسمارٹ افراد ہیں۔ ہمیں ملک میں ایسے افراد کی ضرورت ہے۔ وہ فاکس نیوز کو انٹرویو دے رہے تھے۔ اُن سے ترک وطن کے بارے میں خیالات دریافت کئے گئے تھے۔ اُنھوں نے کہاکہ وہ لوگ ملک کو نہیں آسکتے، وہ ہاورڈ جاسکتے ہیں، وہ اپنی جماعتوں میں اولین مقام پر ہیں اور ہندوستانی ہیں۔ وہ ہندوستان واپس جائیں گے، کمپنیاں قائم کریں گے اور دولت حاصل کریں گے کئی افراد کو ملازم رکھیں گے۔ چنانچہ میں چاہتا ہوں کہ وہ لوگ یہاں تعلیم حاصل کرکے امریکہ میں ہی یہ تمام کام کریں تاکہ کئی لوگوں کو روزگار کے مواقع حاصل ہوسکیں۔ ڈونالڈ ٹرمپ تارکین وطن کے سخت مخالف سمجھے جاتے تھے۔ خاص طور پر اُنھوں نے کہا تھا کہ اگر وہ صدر امریکہ منتخب ہوجائیں تو مسلم تارکین وطن کی امریکہ میں آمد پر امتناع عائد کردیں گے۔ اُن کے اِس مسلم دشمن بیان پر کافی ہنگامہ بھی برپا ہوا تھا۔

TOPPOPULARRECENT