Tuesday , November 21 2017
Home / سیاسیات / ہندوستانی عوام مورچہ کے 7امیدواروں کا اعلان

ہندوستانی عوام مورچہ کے 7امیدواروں کا اعلان

بہار اسمبلی انتخابات کیلئے سابق چیف منسٹر جیتن رام مانجھی کا اقدام

پٹنہ ۔20ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ہیندوستانی عوام  مورچہ ( سیکولر ) نے جو بی جے پی زیر قیادت این ڈی اے کی حلیف ہے آج 7اسمبلی حلقوں کیلئے اپنے امیدواروں کا اعلان کردیا جن میں 7خواتین ہیں ۔ اپنی قیامگاہ پر منعقدہ ایک پریس کانفرنس میں سابق چیف منسٹر جیتن رام مانجھی اور ہندوستانی عوام مورچہ کے صدر نے اپنی پارٹی کے امیدواروں کی دوسری فہرست جاری کردی جس میں 4خواتین کو بھی ٹکٹ دیئے گئے ہیں باقی تین نشستیں  مردوں امیدواروں کو دی گئی ہیں ۔ مانجھی نے 13امیدواروں کی پہلی فہرست چند قبل جاری کی تھی جس میں ضلع جہاں آباد  کے اسمبلی حلقہ مخدوم پور سے اُن کی امیدواری کا اعلان بھی شامل تھا ۔ بی جے پی نے 20اسمبلی نشستیں‘ نشستوں کی تقسیم کے فارمولہ کے تحت مانجھی کی پارٹی کیلئے مختص کی ہیں ۔ مانجھی نے  انکشاف کیا کہ ایک یا دو نشستوں کے سلسلہ میں بی جے پی سے اُن کی پارٹی کے اختلافات تھے لیکن انہیں دور کرلیا گیا ۔

سابق چیف منسٹر نے دعویٰ کیا کہ بی جے پی کی قیادت میں انہیں تیقن دیا ہے کہ وہ مزید چند نشستوں کیلئے اُن کے دعوے پر غور کرے گی ‘ جلد ہی وہ اس سلسلہ میں بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ سے ملاقات کریں گے ۔ مانجھی نے بی جے پی سے خواہش کی کہ وہ چکائی اور امام گنج کی نشستیں ہندوستانی عوام مورچہ کو دینے کی کوشش کریں اور موجودہ رکن اسمبلی ڈیگھا اسمبلی پونم دیوی کو اسی نشست سے ٹکٹ دینے کا تیقن دے ۔ بی جے پی نے اس نشست سے سنجیو چورسیا کو اپنا امیدوار نامزد کیا ہے ۔ سابق چیف منسٹر نے کہا کہ وہ امام گنج کی نشست اپنی پارٹی کیلئے طلب کررہے ہیں ۔ جس کے پاس موجودہ رکن اسمبلی بہار اسمبلی کے اسپیکر ادے نارائن چودھری کو شکست دینے کی صلاحیت رکھنے والا امیدوار موجود ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ چکھائی کی نشست اپنی پارٹی کیلئے اس لئے طلب کررہے ہیں کیونکہ وہاں سے موجودہ رکن اسمبلی نریندر سنگھ کے فرزند سمیت کمار سنگھ یہاں سے امیدوار ہوں گے ‘ جبکہ اس نشست پر ایل جے پی کا بھی ادعا ہے جس کا کہنا ہے کہ یہ جاموئی لوک سبھا حلقہ میں ہے جس کی نمائندگی رام ولاس پاسوان کے فرزند چراغ پاسوان پارلیمنٹ میں کرتے ہیں۔
اسمبلی انتخابات 5 مرحلوں  12‘  16‘28اکٹوبر ‘ یکم نومبر اور 5 نومبر کو مقرر ہیں ۔ رائے شماری 8نومبر ہوگی ۔ نشستوں کی تقسیم کے معاہدہ کے تحت بی جے پی 243 رکنی اسمبلی میں 160نشستوں پر ‘ ایل جے پی 40 ‘ اوپیندر کشواہا کی آر ایس ایل پی 23اور ایچ اے ایم 20نشستوں پر مقابلہ کرے گی ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT