Wednesday , January 17 2018
Home / Top Stories / ہندوستانی مسلمان قومیت پسند ، دہشت گردی کو مذہب سے جوڑنا غلط

ہندوستانی مسلمان قومیت پسند ، دہشت گردی کو مذہب سے جوڑنا غلط

لکھنؤ ۔ /24 مئی (سیاست ڈاٹ کام) دہشت گردی کو کسی مخصوص مذہب سے نہیں جوڑا جانا چاہئیے ۔ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے آج یہ بات کہی اور ہندوستان کے مسلمانوں کو ’’قومیت پسند‘‘ قرار دیا جنہوں نے ہمیشہ دہشت گردی کی مخالفت کی ہے اور انتہاپسند گروپس کو ان پر حاوی ہونے نہیں دیا ۔ انہوں نے پاکستان سے جو خود دہشت گردی کا شکار ہوا ہے کہا کہ

لکھنؤ ۔ /24 مئی (سیاست ڈاٹ کام) دہشت گردی کو کسی مخصوص مذہب سے نہیں جوڑا جانا چاہئیے ۔ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے آج یہ بات کہی اور ہندوستان کے مسلمانوں کو ’’قومیت پسند‘‘ قرار دیا جنہوں نے ہمیشہ دہشت گردی کی مخالفت کی ہے اور انتہاپسند گروپس کو ان پر حاوی ہونے نہیں دیا ۔ انہوں نے پاکستان سے جو خود دہشت گردی کا شکار ہوا ہے کہا کہ اس لعنت سے نمٹنے میں مکمل تعاون کرے ۔ آج یہاں ایک پروگرام کے بعد ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے راجناتھ سنگھ نے کہا کہ ہندوستان میں مسلمان قومیت پسند ہیں ۔ انہوں نے ہمیشہ دہشت گرد عناصر کی مخالفت کی ہے ۔ مسلمانوں نے نہ صرف یہ کہ مخالفت کی بلکہ ان کی حوصلہ شکنی بھی کی ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو چاہئیے کہ وہ دہشت گردی سے نمٹنے میں مکمل دست تعاون دراز کرے ۔ کیونکہ پاکستان آج اسی نوعیت کے مسائل کا سامنا کررہا ہے ۔

وزیر دفاع منوہر پاریکر کے دہشت گردوں کو دہشت گردی کے ذریعہ بے اثر کرنے کے بارے میں حالیہ ریمارکس پر پاکستان کے شدید ردعمل کے بارے میں پوچھے جانے پر راجناتھ سنگھ نے کہا کہ صرف ہندوستان ہی نہیں بلکہ ساری دنیا جانتی ہے دہشت گردی کو فروغ کون دے رہا ہے ۔ قبل ازیں ایس بی آئی آفیسرس کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے راجناتھ سنگھ نے جعلی ہندوستانی کرنسی نوٹ ریاکٹ پر تشویش ظاہر کی ۔ انہوں نے کہا کہ یہ جعلی کرنسی دہشت گردی کے فروغ میں استعمال ہورہی ہے چنانچہ بینکوں کو چوکس رہنے کی ضرورت ہے ۔ راجناتھ سنگھ نے بی جے پی کے مہا سمپرک ابھیان کا بھی آغاز کیا اور اس موقع پر انہوں نے اپوزیشن کی ان تنقیدوں کو مسترد کردیا کہ نریندر مودی حکومت نے سوائے بلند بانگ وعدوں کے کچھ نہیں کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عالمی رائے عامہ یہ ہے کہ ہندوستان 2025 ء تک معاشی سوپر پاور بن جائے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ این ڈی اے کی ایک سالہ کارکردگی کا تجزیہ ہندوستان ہی میں نہیں بین الاقوامی سطح پر کیا جارہا ہے ۔ آج وہ پورے دعوے کے ساتھ یہ بات کہہ سکتے ہیں کہ مودی زیرقیادت حکومت نے عوام کو یہ یقین دلایا ہے کہ ہندوستان 2025 ء تک معاشی سوپر پاور طاقت بن جائے گا ۔ نکسل ازم سے متعلق سوال پر راجناتھ سنگھ نے کہا کہ اگرچیکہ میں تعداد پر یقین نہیں رکھتا ۔ اگر گزشتہ 10 تا 15 سال پر نظر ڈالی جائے تو نکسل ازم میں صرف گزشتہ ایک سال میں 20 تا 25 فیصد کمی آئی ہے ۔ وزیراعظم نریندر مودی کے بیرونی دورہ پر اپوزیشن کی جانب سے اٹھائے گئے سوالات سے متعلق انہوں نے کہا کہ ان کے تمام پیشرو وزرائے اعظم نے بھی بیرونی دورے کئے ہیں ۔ لیکن مودی کا ہی پرتپاک خیرمقدم کیا جارہا ہے ۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ملک کا وقار بڑھ رہا ہے اور اس کی شان میں اضافہ بھی دیکھا جارہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT