Thursday , December 14 2017
Home / Top Stories / ہندوستانی معیشت ہنوز مسائل سے آزاد نہیں

ہندوستانی معیشت ہنوز مسائل سے آزاد نہیں

موڈی ریٹنگ پر حکومت کو غلط فہمی میں مبتلا نہ ہونے کا مشورہ : منموہن سنگھ
کوچی ۔ 18 ۔ نومبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے عالمی ادارہ موڈی کی طرف سے اپنی کریڈٹ ریٹنگ میں ہندوستان کے درجہ میں اضافہ پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ این ڈی اے حکومت کو اس غلط فہمی میں مبتلا نہیں ہونا چاہئے کہ معیشت اب مشکلات سے باہر نکل چکی ہے ۔ امریکہ میں واقع اس عالمی ریٹنگ ادارہ نے ہندوستانی ریٹنگ کو ایک پائیدان اوپر اٹھاتے ہوئے Baa3 سے Baa2 پر پہونچا دیا ہے ۔ اور ریٹنگ زمرہ کو ’ مثبت ‘ سے ’مستحکم ‘ میں تبدیل کیا گیا ہے ۔ موڈی ریٹنگ کے بارے میں ایک سوال پر منموہن سنگھ نے کہا کہ ’ مجھے خوشی ہے کہ موڈی نے وہی کیا ہے جو اس کو کرنا چاہئے ۔ لیکن ہمیں اس پر زیادہ اطمینان نہیں کرنا چاہئے ۔ میرے خیال میں ہمیں اس غلط فہمی میں نہیں رہنا چاہئے کہ اب ہم ( معاشی ) مسائل سے باہر نکل چکے ہیں ‘ ۔ ڈاکٹر منموہن سنگھ نے ارناکلم کے سینٹ ٹریس کالج کے شعبہ اقتصادیات میں ہندوستانی معیشت پر منعقدہ ایک سمینار کے موقع پر مزید کہا کہ وہ اس ملک کو 8 تا 10 فیصد کی شرح ترقی پر پہونچانا چاہتے ہیں ۔ اس شرح تک پیشرفت کے لیے معیشت کو ایک مضبوط و مستحکم رہنمائی کی ضرورت ہے ۔ ان کے تبصروں سے قبل وزیر فینانس ارون جیٹلی نے موڈی کی طرف سے ہندوستانی ریٹنگ میں 13 سال بعد کی گئی تبدیلی کو حکومت کی طرف سے کیے گئے اصلاحات کا تاخیر سے کیا جانے اعتراف قرار دیا تھا ۔ ڈاکٹر منموہن سنگھ نے خبردار کیا کہ خام تیل کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ بھی ملک کے مالیاتی نظام کو متاثر کرسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ’ خام تیل کی قیمتیں اب 62.64 ڈالر فی بیرل ہوچکی ہیں جو چند ماہ قبل 45 تا 40 ڈالر فی بیرل تھیں ۔ چنانچہ یہ ادائیات کا توازن متاثر کریں گے ۔ اس سے مالیاتی نظام بھی زیر بار ہوسکتا ہے ۔

ہماچل اور گجرات میں راہول کی محنت
منموہن سنگھ کی جانب سے ستائش
کوچی ۔ 18 ۔ نومبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے ہماچل پردیش اور گجرات انتخابات کی مہم میں کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی کی انتھک محنت کی آج ستائش کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ ان کی پارٹی فاتح کی حیثیت سے ابھرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ’ سیاست ایک ناقابل قیاس پیشہ ہے اور کوئی صرف قسمت آزمائی ہی کرسکتا ہے ‘ ۔ ڈاکٹر منموہن سنگھ ارناکل کے سینٹ تھریسا کالج میں ہندوستانی معیشت کی ترقی : پالیسی اور مواقع ‘ کے زیر عنوان ایک سمینار کے موقع پر اخباری نمائندوں سے غیر رسمی بات چیت کررہے تھے۔ ہماچل پردیش اور گجرات میں کانگریس کی کامیابی کے امکانات کے بارے میں ایک سوال پر ڈاکٹر سنگھ نے جواب دیا کہ ’ میرے خیال میں ہمارے نائب صدر راہول گاندھی کافی محنت و جانفشانی کے ساتھ کام کررہے ہیں ۔ مجھے توقع ہے کہ ان کی کوشش فتح سے ہمکنار ہوگی لیکن سیاست ایک ناقابل قیاس پیشہ ہے چنانچہ کوئی صرف طبع آزمائی ہی کرسکتا ہے ‘ ۔ ڈاکٹر منموہن سنگھ نے کہا کہ نوٹ بندی اور جی ایس ٹی پر مرکزی بی جے پی حکومت کی طرف سے عمل آوری پر عوامی برہمی کے اسمبلی انتخابات میں اظہار کی پیش قیاسی کے لیے وہ علم غیب تو نہیں رکھتے لیکن امید کرتے ہیں کہ ایسا ہوسکتا ہے کہ عوام اپنی ناراضگی ظاہر کریں گے ۔

 

 

Top Stories

TOPPOPULARRECENT