Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / ہندوستانی نژاد مسلم ڈاکٹر اور اہلیہ کو امریکہ کا باوقار ایوارڈ

ہندوستانی نژاد مسلم ڈاکٹر اور اہلیہ کو امریکہ کا باوقار ایوارڈ

نئی دہلی ۔ 27 ۔ اکٹوبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : عالمی سطح پر ایڈز کی روک تھام کیلئے ڈھیر ساری کوششیں کی جارہی ہیں اور اس کے بہتر نتائج بھی برآمد ہورہے ہیں۔ ایڈز کے کامیاب و مؤثر علاج کے لئے دنیا کے بیشتر ممالک میں سائنسداں، ڈاکٹرس اور ریسرچ اسکالرس تحقیق میں مصروف ہیں۔ اس معاملہ میں ہندوستانی سائنسداں بھی سرگرم ہیں اور اُمید ہے کہ انھیں اپنے مشن میں کامیابی بھی ملے گی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ایک ہندوستانی نژاد امریکی جوڑے کو ایچ آئی وی / ایڈز پر کنٹرول کیلئے کی جانے والی ان کی غیرمعمولی خدمات پر باوقار ایوارڈ سے نوازا گیا ہے۔ پروفیسر عبدالکریم اور ان کی اہلیہ قریشہ عبدالکریم کو انسٹی ٹیوٹ فار ہیومن وائرولوجی (IHV) بالٹی مور کی جانب سے ایوارڈ عطا کیا گیا۔ انھیں یہ ایوارڈ رابرٹ گیالو جیسی شخصیت کے ہاتھوں پیش کیا گیا جنھوں نے دریافت کیا تھا کہ ایچ آئی وی، ایڈز کا باعث ہے۔ بالٹی مور میں آئی ایچ وی کی 19 ویں انٹرنیشنل میٹنگ کا انعقاد عمل میں آیا۔ رابرٹ گیالونے بعد میں ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہاکہ ان دونوں شخصیتوں پروفیسر سلیم عبدالکریم اور قریشہ عبدالکریم نے صحت عامہ اور وبائی امراض سے متعلق عام Epidemiology میں اور ایچ آئی وی / ایڈز کی تاریخ میں عظیم تر اور نمایاں کردار ادا کیا ہے۔ ایچ آئی وی / ایڈز سے متاثرہ لوگوں کی طبی نگہداشت کے معاملہ میں بھی اس جوڑے کی خدمات قابل تحسین ہیں۔ مسٹر گیالو کے مطابق انسداد ایڈز اور ایچ آئی وی انفیکشن سے متاثرہ افراد کی مدد کے لئے پروفیسر عبدالکریم اور قریشہ عبدالکریم نے جو خدمات انجام دی ہیں انھوں نے ایسی خدمات کسی اور کو کرتے نہیں دیکھی۔ سلیم عبدالکریم، سنٹر فار دی ایڈز پروگرام آف ریسرچ ان ساؤتھ افریقہ (CAPRISA) کے ڈائرکٹر اور قریشہ عبدالکریم اسوسی ایٹ سائنٹفک ڈائرکٹر کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہی ہیں۔ دونوں خواتین میں ایچ آئی وی کے انسداد کے انوکھے اور مؤثر طریقوں کے فروغ پر تحقیق بھی کررہے ہیں اور نیویارک کی کولمبیا یونیورسٹی میں شعبہ وبائی امراض کے پروفیسرس ہیں۔ وہ کوازولو تنال یونیورسٹی جنوبی افریقہ میں اعزازی خدمات بھی انجام دیتے ہیں۔ دنیا میں اس جوڑے نے پہلی مرتبہ ثابت کیاکہ اینٹی ریٹرو وائرلیس جنسی اختلاط سے ہونے والی وائرس کی منتقلی کو روک سکتی ہے اور ان کی اسٹڈی کو سال کے دس بہترین طبی کامیابیوں میں شامل کیا گیا۔ پروفیسر سلیم عبدالکریم اور پروفیسر قریشہ عبدالکریم پہلے سائنسداں ہیں جنھوں نے سب سے پہلے دریافت کیاکہ TENOFOVIR GEL ، اعضائے نازک کی خارش کو روک سکتی ہے اور یہ GEL اس بیماری کیلئے بہت ہی مؤثر ہے۔ پروفیسر قریشہ عبدالکریم انسداد ایڈز اور دوسرے وبائی امراض کے خاتمہ کے لئے کوششوں پر جنوبی افریقہ کا سب سے اعلیٰ اعزاز آرڈر آف مایونگو بووے بھی حاصل کرچکی ہیں۔ 24 مارچ 2016 ء کو انھیں ایڈز سے مقابلہ اور افریقی خواتین کی زندگیاں بہتر بنانے میں مدد کیلئے Loreal Unesco for Women in Science Award بھی عطا کیا گیا۔ قریشہ کریم 1960 ء میں جنوبی افریقہ کے علاقہ ٹونگاٹ میں پیدا ہوئیں۔ وہ اکیڈیمی آف سائنس آف ساؤتھ افریقہ ، دی افریکن اکیڈیمی آف سائنس اور نیشنل اکیڈیمی آف میڈیسن امریکہ کی رکن بھی ہیں۔ پروفیسر قریشہ عبدالکریم کو ورلڈ اکیڈیمی آف سائنس سے 2014 ء میں Twas – Lenova Science Prize حاصل کرنے والی پہلی خاتون سائنسداں ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔

TOPPOPULARRECENT