Tuesday , December 11 2018

ہندوستانی ٹیم کیلئے 2014 ء نشیب و فراز کا سال

نئی دہلی ۔ 24 ۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) روہت شرما کی ونڈے میں ریکارڈ اننگزاور بیرونی سیریزوں میں مسلسل ناکامیوں کے ساتھ ہندوستانی ٹیم کیلئے سیزن 2014 ء نشیب و فراز سے بھرا ہوا ہے۔ علاوہ ازیں اسی دوران آئی پی ایل 6 کے اسپاٹ فکسنگ تنازعہ میں بی سی سی آئی کے علاوہ اس کے معزول صدر ایم سرینواسن کیلئے بھی مشکل رہا ہے۔ 2014 ء میں روہت شرما کی ریکارڈ

نئی دہلی ۔ 24 ۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) روہت شرما کی ونڈے میں ریکارڈ اننگزاور بیرونی سیریزوں میں مسلسل ناکامیوں کے ساتھ ہندوستانی ٹیم کیلئے سیزن 2014 ء نشیب و فراز سے بھرا ہوا ہے۔ علاوہ ازیں اسی دوران آئی پی ایل 6 کے اسپاٹ فکسنگ تنازعہ میں بی سی سی آئی کے علاوہ اس کے معزول صدر ایم سرینواسن کیلئے بھی مشکل رہا ہے۔ 2014 ء میں روہت شرما کی ریکارڈ اننگز 264 رنز نمایاں مظاہرہ ہے جو انہوں نے سری لنکا کے خلاف ایڈن گارڈنس کے تاریخی میدان میں بنایا۔ روہت شرما کی اس اننگز میں واضح کردیا ہے کہ گزشتہ 10 برسوں کے دوران ونڈے کرکٹ کس طرح تبدیل ہوچکی ہے کیونکہ جب پہلی مرتبہ سچن تنڈولکر نے ونڈے میں ڈبل سنچری اسکور کی تھی تو اس ریکارڈ کو توڑنا مشکل تصور کیا جارہا تھا، جس کے بعد ویریندر سہواگ نے ونڈے کی دوسری ڈبل سنچری اسکور کی۔

علاوہ ازیں 1989 ء کے بعد 2014 ء میں یہ پہلا موقع رہا کہ ہندوستانی ٹیم کی فہرست میں ماسٹر بلاسٹر سچن تنڈولکر کا نام شامل نہیں رہا۔ سچن تنڈولکر کے بغیر 2014 ء ہندوستانی کرکٹ کیلئے نشیب و فراز کا سیزن رہا جہاں ہندوستانی ٹیم کو بیرون ملک کھیلے گئے ٹسٹ مقابلوں میں یکے بعد دیگرے ناکامیوں کا سامنا کرنا پڑا۔ علاوہ ازیں رواں سیزن ہندوستانی ٹیم سے ویریندر سہواگ ، یوراج سنگھ ، ہربھجن سنگھ ، ظہیر خان اور گوتم گمبھیر کے نام بھی ایسا لگتا ہے کہ ہمیشہ کیلئے جدا ہوگئے ہیں۔ میدان کے باہر بھی ہندوستانی کرکٹ تنازعات اور عدالتوں میں مقدمات کیلئے بھی 2014 ء میں یاد رکھی جائے گی کیونکہ بی سی سی آئی کے طاقتور صدر تصور کئے جانے والے این سرینواسن کا نام نہ صرف آئی پی ایل اسپاٹ فکسنگ میں لیا گیا بلکہ انہیں سپریم کورٹ نے صدر کے عہدہ سے ہٹایا۔

TOPPOPULARRECENT