Monday , December 18 2017
Home / ہندوستان / ہندوستانی کھاتہ داروں سے ٹیکس رہائشی موقف کی بیرونی بینکوں سے طلبی

ہندوستانی کھاتہ داروں سے ٹیکس رہائشی موقف کی بیرونی بینکوں سے طلبی

اچھے دن آنے والے ہیں …
ہندوستانی کھاتہ داروں سے ٹیکس رہائشی موقف کی بیرونی بینکوں سے طلبی
ممبئی۔ 12 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) گزشتہ ماہ سے نشاندہی ہوتی ہے کہ حکومت سیاہ کھاتوں کو بے نقاب کررہی ہے اور سرکاری مالیاتی اداروں سے خواہش کی جارہی ہے کہ وہ اپنے ٹیکس رہائشی موقف کرسمس سے پہلے ظاہر کریں اور اگر وہ ایسا نہ کریں تو بینکس ان کے کھاتے روک دے گی اور جو کچھ معلومات ان کے پاس ہوں گے، وہ ایسے کھاتہ داروں کے بارے میں حکومت ہند سے حاصل کریں گی۔ کئی کھاتہ دار تذبذب کی کیفیت میں ہیں۔ انہیں خوف ہے کہ ایسے سوالات کے جواب دینے پر انہیں ہندوستانی محکمہ ٹیکس کے بارے میں انکشاف کرنا ہوگا، اس کے نتیجہ میں مسلسل کئی سوالات اُٹھ کھڑے ہوں گے۔ ان میں سے بعض شخصی ہوں گے۔ خاص طور پر وہ لوگ جو انکشاف حقائق رپورٹ اپنی غیرملکی اثاثہ جات کے بارے میں ٹیکس ریٹرنس میں ظاہر نہیں کرتے، اس موقع سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں اور ٹیکس کے دفتر کو چیلنج کرنا چاہتے ہیں۔ اگر بعدازاں وہ ایسا کریں تو غیرمقیم ہندوستانی جن میں سے بیشتر حقیقی اعتبار سے بینک اکاؤنٹس ٹیکس محکموں میں کھول چکے ہیں، اپنے ہندوستان میں کھاتے بند کردینا چاہتے ہیں یا اب بھی ان کے تازہ ترین ٹیکس رہائشی موقف کا اظہار کرنا ہوگا، تاہم جو لوگ اپنے کھاتے 31 ڈسمبر 2015ء سے پہلے بند کرچکے ہوں، تازہ ترین تحقیقات سے بچ جائیں گے۔ وہ بینکس کھاتوں میں کوئی رقم نہیں رکھتے ہوں گے یا جن میں موجود رقم غیرواضح ہوگی، مثال کے طور پر برطانیہ کے ایک بینکنگ گروپ میں یہ فقرہ درج ہے: ’’اگر ہم ان کا ساتھ نہ دیں تو 24 ڈسمبر 2017ء وہ بھی ہمارا ساتھ نہیں دیں گے‘‘۔ ہمیں اس رپورٹ کو غیراہم نہیں سمجھنا چاہئے۔ یہ ٹیکس کے مقصد سے ہے اور اس کے بموجب ہمیں بھی ضروری ہے کہ ہم ٹیکس اتھاریٹی سے موزوں منظوری حاصل کریں۔

TOPPOPULARRECENT