Saturday , April 21 2018
Home / کھیل کی خبریں / ہندوستانی کھلاڑیوں کے ڈوپ ٹسٹ کا مطالبہ مسترد

ہندوستانی کھلاڑیوں کے ڈوپ ٹسٹ کا مطالبہ مسترد

ممبئی۔11نومبر (سیاست ڈاٹ کام )بی سی سی آئی کی ملک کی انسداد ڈوپنگ ایجنسی کے ساتھ رسہ کشی شدت اختیار کر گئی ہے اور بورڈ نے ڈوپنگ ایجنسی کو ماننے سے انکار کرتے ہوئے تعاون نہ کرنے کا اعلان کردیا ہے۔گزشتہ تین سال کے دوران عالمی انسداد ڈوپنگ ایجنسی ’واڈا‘ کی جانب سے دو کھلاڑیوں کے ڈوپ ٹسٹ مثبت آ چکے ہیں لیکن اس کے باوجود ملک کی اینٹی ڈوپنگ ایجنسی ’ناڈا‘ جو اپنے کھلاڑیوں کے ڈوپ ٹسٹ کرنے سے روک دیا ہے۔بی سی سی آئی کے چیف ایگزیکٹو راہول جوہری نے ناڈا اور وزارت کھیل کو لکھے گئے مکتوب میں ملک کی انسداد ڈوپنگ ایجنسی سے تعاون نہ کرنے کے عزم کا ازسرنو اعادہ کیا۔ناڈا کے سربراہ نوین اگروال کو خط میں لکھا گیا کہ یہ بات بتانا ضروری ہے کہ بی سی سی آئی کوئی قومی اسپورٹس فیڈریشن نہیں لہٰذا ڈومیسٹک یا انٹرنیشنل مقابلوں میں ہندوستانی کھلاڑیوں کے ڈوپ ٹسٹ لینا ان کے دائرہ اختیار میں نہیں آتا۔انہوں نے کہا کہ اس لیے بی سی سی آئی کا کوئی بھی عہدیدار ہمارے کھلاڑیوں کے ڈوپ ٹسٹ کیلئے ناڈا سے تعاون کرنے کا مجاز نہیں۔راہول جوہری نے واضح کیا کہ بی سی سی آئی کا ڈوپنگ کے حوالے سے اپنا انتہائی موثر اور شفاف نظام ہے جو ڈومیسٹک اور انٹرنیشنل مقابلوں کے علاوہ ایونٹس نہ ہونے کی صورت میں بھی کھلاڑیوں کے ڈوپ ٹسٹ وقتاً فوقتاً لیتا رہتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے رکن کی حیثیت سے بی سی سی آئی 2011 سے اس کے انسداد ڈوپنگ قوانین پر سختی سے کاربند ہے۔ کرکٹ حلقوں میں ڈوپنگ کے حوالے سے بحثت کا آغاز اس وقت ہوا تھا جب رواں سال عالمی ڈوپنگ ایجنسی واڈا نے نام ظاہر کیے بغیر ایک ہندوستانی کرکٹر کا ڈوپ ٹسٹ مثبت آنے کا انکشاف کیا تھا۔یاد رہے کہ اس سے قبل 2013 میں انڈین پریمیئر لیگ کے کھلاڑی پرادیپ سانگوان ڈوپ ٹسٹ میں ناکام رہے تھے اور ان پر بی سی سی آئی کے زیر انتظام ایونٹس میں شرکت پر 18 ماہ کیلئے پابندی عائد کردی گئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT