Saturday , December 16 2017
Home / دنیا / ہندوستان ، امریکہ کا جغرافیائی حلیف و کلیدی شراکت دار

ہندوستان ، امریکہ کا جغرافیائی حلیف و کلیدی شراکت دار

پاکستان کے ساتھ تعلقات کی تاریخی نوعیت، ریپبلکن پارٹی کے انتخابی منشور کے اہم نکات جاری
کلیو لینڈ (یو ایس) 19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کو امریکہ کا جغرافیائی حلیف اور کلیدی تجارتی شراکت دار قرار دیتے ہوئے ریپبلکن پارٹی نے ہندوستانی حکومت سے کہا ہے کہ اپنی تمام مذہبی برادریوں کی تشدد اور امتیازی برتاؤ سے حفاظت کرے اور اُس کے ساتھ ساتھ ایف ڈی آئی کے عظیم تر بہاؤ کی اجازت دے۔ پارٹی نے 58 صفحات پر مشتمل ریپبلکن منشور میں جسے رسمی طور پر منظور کرلیا گیا ہے، کہاکہ ہندوستانی شخصیتوں نے امریکہ کے لئے نمایاں کام انجام دیئے ہیں۔ انڈیا ہمارا جغرافیائی حلیف اور اہم تجارتی شراکت دار ہے۔ اِس کے عوام کی حرکیاتی قابلیت اور اس کے جمہوری اداروں کی پائیداری اُن کے ملک کو نہ صرف ایشیاء بلکہ دنیا بھر میں قائدانہ موقف دلارہی ہے۔ ہندوستان کی تمام مذہبی برادریوں کے تعلق سے ہم اپیل کرتے ہیں کہ تشدد اور امتیاز کے خلاف اُن کی حفاظت کی جائے۔ 2012 ء کے ریپبلکن پلیٹ فارم سے ہندوستان کے ساتھ معاشی اور ثقافتی دونوں اعتبار سے طاقتور تر رشتہ استوار کرنے کا خیرمقدم کیا گیا تھا اور قومی سلامتی کے اُمور میں بھی باہمی تعاون پر زور دیا گیا تھا۔

اِس دوران ریپبلکن پارٹی نے کہاکہ پاکستان کے نیوکلیائی ہتھیاروں کی سلامتی یقینی بنانے کی ضرورت ہے اور زور دیا کہ پاکستانیوں، افغان قوم اور امریکیوں کا طالبان کا صفایا کرنے سے کہیں آگے بڑھ کر مشترک مفاد پایا جاتا ہے۔ پارٹی کے انتخابی منشور میں کہا گیا کہ امریکہ اور پاکستان کے درمیان رشتہ تاریخی نوعیت کا حامل ہے اور پارٹی باہمی روابط کو مضبوط کرنے کی خواہاں ہے، جو مشرق وسطیٰ میں جاری جھگڑوں کے سبب کچھ حد تک کشیدہ ہو چلے ہیں۔ منشور میں کہا گیا کہ ہمارے سرکاری تعلقات میں اشتراک ضروری ہے جو بعض اوقات مشکل ضرور رہتا ہے لیکن دونوں فریقوں کے لئے فائدہ ضرور ہوتا ہے۔ اِس لئے ہم تاریخی روابط کو مضبوط تر بنانے کی سمت کام کرنا چاہیں گے۔ یہ عمل اُس وقت تک پورا نہیں ہوسکتا جب تک پاکستان کے کسی بھی شہری کو دہشت گردی کے خلاف جنگ کرنے میں مدد کرنے کی سزا ملتی رہے۔ اِس خطہ میں پاکستانیوں، افغان قوم اور امریکیوں کا مشترک مفاد مضمر ہے۔

TOPPOPULARRECENT